Wednesday , August 16 2017
Home / شہر کی خبریں / خشک سالی سے متاثرہ تلنگانہ سے مہاراشٹرا کو پانی کی سربراہی

خشک سالی سے متاثرہ تلنگانہ سے مہاراشٹرا کو پانی کی سربراہی

مرکزی وزیر نرملا سیتارمن کا حکومت مہاراشٹرا کے وزیر مال ایکناتھ کو تیقن
حیدرآباد۔ 8اپریل (سیاست نیوز) خشک سالی سے متاثرہ ریاست تلنگانہ پڑوسی متاثرہ ریاست کو پانی سربراہ کریگی۔ جی ہاں! مرکزی حکومت اس بات پر غور کر رہی ہیکہ خشک سالی سے پریشان ریاست مہارشٹرا کو تلنگانہ سے پانی کی سربراہی یقینی بنائی جائے۔ اس سلسلہ میں مرکزی وزیر مسز نرملا سیتارمن نے حکومت مہاراشٹرا کے وزیر مال ایکناتھ کھڑکے کو تیقن بھی دیدیا ہے۔ ریاست تلنگانہ کے زائد از 233منڈل خشک سالی سے متاثر ہیں اور حکومت تلنگانہ خود ان حالات سے نمٹنے کی متحمل نظر نہیں آرہی ہے ایسی صورت میں پڑوسی ریاست کو پانی کی سربراہی کا فیصلہ تلنگانہ عوام کے حق میں بہتر نہیں ہو سکتا چونکہ خود ریاست تلنگانہ کے کئی مواضعات میں خشک سالی اور شدید گرمی سے عوام کا برا حال ہے۔ تلنگانہ کے دیہی علاقہ جات میں پینے کے پانی کے مسائل پیدا ہو چکے ہیں اور شہری علاقوں میں زیر زمین سطح آب میں تیزی کے ساتھ گراوٹ ریکارڈ کی جا رہی ہے۔ مہارشٹرا کے علاقوں لاتور ‘ بیڑ ‘ پربھنی و اطراف کے مواضعات خشک سالی سے متاثر ہونے کے سبب ٹرین کے ذریعہ پانی کی سربراہی کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ علاوہ ازیں پانی کے حصول کیلئے ہونے والے امکانی تشدد کو روکنے کیلئے دفعہ 144کے نفاذ کے بعد ٹینکرس کے ذریعہ پانی سربراہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ لاتور میں پانی کی قلت سے نمٹنے کیلئے ٹرین سے پانی کی سربراہی کا فیصلہ لینے کے بعد حکومت نے یہ یقین دہانی کروائی ہیکہ اندرون 15یوم ٹرین کے ذریعہ پانی لاتور پہنچنے لگے گا۔ مہاراشٹرا میں برسر اقتدار بھارتیہ جنتا پارٹی حکومت کے وزیر کو مرکزی وزیر کی جانب سے تیقن دیا جانا کہ مرکز ریاست تلنگانہ سے مہاراشٹرا کو پانی کی سربراہی کے اقدامات کرے گا تو یہ بات شائد حکومت تلنگانہ کے حق میں بھی بہتر نہیں ہے چونکہ ایسا کرنے پر حکومت کو عوامی ناراضگی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ انسانی ہمدردی کی بنیادوں پر پڑوسی ریاست کی مددضرور کرنی چاہئے لیکن مرکزی حکومت پر بھی یہ ذمہ داری عائد ہوتی ہیکہ وہ حکومت تلنگانہ کی جانب سے  خشک سالی کی صورتحال سے نمٹنے کیلئے طلب کردہ فنڈز جاری کرنے کے بعد تلنگانہ سے اس بات کی توقع کرے کہ وہ مرکز کے کہنے پر پڑوسی ریاست کی مدد کرے لیکن مرکزی حکومت نے ریاست تلنگانہ کی جانب سے طلب کردہ رقم میں 10-15فیصد رقم بھی تا حال جاری نہیں کیے گئے اور اب یہ توقع کے جارہی ہیکہ ریاست تلنگانہ اپنے پڑوسی کی مدد پانی سربراہ کرتے ہوئے کرے گا۔

TOPPOPULARRECENT