Saturday , July 22 2017
Home / دنیا / خطرناک دہشت گرد جلال الدین تیونسی داعش کا متوقع امیر

خطرناک دہشت گرد جلال الدین تیونسی داعش کا متوقع امیر

موصل۔ 15 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) داعش تنظیم کے سربراہ ابوبکر البغدادی کی ہلاکت کی خبر پھیل جانے کے بعد توقع ہے کہ شدت پسند تنظیم اپنی صفوں میں اتحاد برقرار رکھنے کی غرض سے آنے والے عرصے میں اپنے نئے خلیفہ کے نام کا اعلان کر دے۔یہ بات چند روز قبل داعش کی جانب سے جاری ہونے والے مختصر بیان میں سامنے آئی۔ اس بیان میں تنظیم نے اپنے مقتول سرغنہ ابوبکر البغدادی کی تعزیت کی اور تنظیم کے ارکان پر زور دیا کہ وہ اپنی صفوں میں یک جہتی کو برقرار رکھتے ہوئے اپنے مراکز اور گڑھ میں ڈٹے رہیں۔داعش تنظیم کو ان دنوں کافی دشوار وقت کا سامنا ہے بالخصوص کچھ عرصہ قبل عراق میں پے در پے ہزیمتوں کے بعد مختلف لڑائیوں میں اس کی قیادت کا بڑا حصہ ہلاک ہو گیا اور چند ہی اہم رہ نما باقی رہ گئے۔ ان میں نمایاں ترین نام لیبیا میں داعش کا امیر جلال الدین التونسی ہے جو ابوبکر البغدادی کی موت ثابت ہو جانے کے بعد البغدادی کی جاں نشینی کے لیے اہل ترین ناموں میں شمار کیا جا رہا ہے۔جلال الدین التونسی کا اصلی نام محمد بن سالم التونسی ہے۔ وہ 1982 میں تیونس کے ساحلی صوبے سوسہ کے علاقے مساکن میں پیدا ہوا۔ گزشتہ صدی میں 90ء کی دہائی سے وہ فرانس ہجرت کر گیا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT