Sunday , September 24 2017
Home / شہر کی خبریں / خوابوں کو عملی شکل دیجئے اپنے نام کا اندراج کروائیں اور اسٹارٹ اپ کا حصہ بنیں

خوابوں کو عملی شکل دیجئے اپنے نام کا اندراج کروائیں اور اسٹارٹ اپ کا حصہ بنیں

محمد مبشر الدین خرم
حیدرآباد۔3مئی ۔تجارت سنت ہے اور تجارتی اصولوں سے انحراف کئے بغیر کی جانے والی تجارت میں برکت ہے۔ دور حاضر میں تجارتی رجحان میں آنے والی کمی کو دیکھتے ہوئے حکومت کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات سے نوجوان نسل بھرپور استفادہ کرتے ہوئے اپنے مستقبل کو سنوار سکتی ہے۔ ہر شعبہ میں مسلم نوجوان اور خواتین جو ترقی کے خواب دیکھتے ہیں انہیں صرف ملازمت پر انحصار کے بجائے اپنے ذہن میں موجود عصر حاضرکے تقاضوں کو پورا کرنے والی تجارت پر توجہ دیتے ہوئے اپنی منزل کا تعین کر سکتے ہیں۔ حکومت کی ’میک ان انڈیا‘ اسکیم کے ذریعہ اپنے تیارکردہ اشیاء کی فروخت کے لئے بین الاقوامی سطح پر پلیٹ فارم دستیاب ہونے لگے ہیں اور ان پلیٹ فارمس کے ذریعہ مسلم خاندان اپنی معیشت کو بہتر بنانے کے لئے منصوبہ بندی کر سکتے ہیں لیکن اپنے ذہنو ںمیں موجود آئیڈیا اگر آپ کے ذہن کی حد تک ہی محدود ہوجاتا ہے تو ایسی صورت میں یہ آئیڈیا کسی اور کے ذہن میں بھی آسکتا ہے اور وہ اس آئیڈیا کے ذریعہ ترقی کی منزلیں طئے کرتے ہوئے آگے بڑھ جائے گا ۔ ایسا نہیں ہے کہ مسلم نوجوان نسل میں صلاحیت نہیں ہے لیکن انہیں دستیاب مواقع کے متعلق مسلم نوجوان اور خواتین خود مکتفی ہونے کی کوشش کے بجائے احساس کمتری میں مبتلاء ہونے لگتے ہیں۔ قومی سطح پر حالیہ عرصہ میں اپنے ذہن اور مہارت کی بنیاد پر شروع کئے جانے والے تجارتی اداروں کو سرکاری امداد سے کافی ترقی ملنے لگی ہے لیکن ترقی کی دوڑ میں صرف وہی لوگ آگے بڑھ رہے ہیںجو دوڑ میں حصہ لینے کیلئے تیار ہیں ۔ زرعی شعبہ میں نامیاتی(organic) پیداوار پر توجہ مبذول کرتے ہوئے کئے جانے والے تجربات میں کئی لوگوں کو زبردست کامیابی حاصل ہونے لگی ہے ۔ اسی طرح ملک میں مٹی کے برتن بنانے کا کام اب تک کمہار کیا کرتے تھے لیکن راجستھان میں تیار کی جانے والی ’مٹی کی بوتل‘ اب ملک بھر میں ہی نہیں بلکہ بین الاقوامی سطح پر تیزی سے شہر حاصل کرنے لگی ہے اور یہ ایک صنعت کی شکل اختیار کرتی جا رہی ہے۔ ملک کے مختلف خطوں میں تعلیم یافتہ و تجربہ کار نوجوان جو مثبت فکر کے حامل ہیں وہ اپنے منصوبوں کو عملی جامہ پہنانے کے لئے زرعی شعبہ میں جڑی بوٹیوں کی پیداوار کے ذریعہ عالمی مارکٹ میں ان کی فروخت کو ممکن بنارہے ہیں۔ہندستان کے کئی شہروں میں خواتین گھریلو صنعتوں کو عصری طریقہ کار سے ہم آہنگ کرتے ہوئے ترقی کر رہی ہیں۔جن لوگوں کے ذہنوں میں نئے آئیڈیا و منصوبہ موجود ہیں وہ اپنے آئیڈیا اپنی حد تک محدود رکھنے کے بجائے انہیں قابل عمل بنانے کے لئے کوشش کریں۔ انٹرنیٹ اور سوشل میڈیا نے دنیا کو گلوبل ویلیج میں تبدیل کردیا ہے اور اس کے ذریعہ اپنے خیالات اور تجاویز کو مؤثر بنانے کا بھی کام سر انجام دیا جا سکتا ہے۔ ملازمت اور اپنی صلاحیت کے مطابق کام کرنے کے ساتھ ساتھ ذہن میں کوئی ایسا منصوبہ بھی ہوتا ہے جس پر عمل آوری میں معاشی حالات رکاوٹ کا سبب بنتے ہیںیا پھر بازاروں تک رسائی انتہائی اہم مسئلہ بن جاتی ہے۔ اسی طرح کئی اور امور ہوتے ہیں جو ترقیاتی و تجارتی منصوبوں میں رکاوٹ پیدا کرتی ہیں لیکن امور کے سبب حوصلہ ہارنے کے بجائے اپنی تجاویز کے ساتھ ہم سے رابطہ کریں تاکہ ان کی تجاویز کو عملی جامہ پہنانے کے متعلق غور کیا جا سکے۔ اپنی تجاویز اور اپنے ذہن میں موجود نئے تجارتی نظریات و رجحان اپنے مکمل پتہ اور رابطہ کی تفصیلات کے ساتھ ای۔میل [email protected] پر روانہ کی جاسکتی ہیں۔ اگر آپ اپنے اسٹارٹ اپ نظریہ و منصوبہ کو ای۔میل کے ذریعہ شئیر کرنا نہیں چاہتے ہیں تو آپ کم از کم اپنے مکمل پتہ و رابطہ کی تفصیلات روانہ کریں تاکہ اس خصوص میں آپ سے رابطہ قائم کرنے اور رجسٹریشن کے ذریعہ مستقبل کے منصوبہ کو قطعیت دی جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT