Sunday , March 26 2017
Home / شہر کی خبریں / خواتین کی خود مختاری پر بات کرنے کا کویتا کو حق نہیں

خواتین کی خود مختاری پر بات کرنے کا کویتا کو حق نہیں

تلنگانہ راشٹرا سمیتی حکومت میں خواتین کی صفر نمائندگی ، پی وی راگھولو
حیدرآباد ۔ 18 ۔ فروری : ( سیاست نیوز) : قومی سی پی آئی ایم پولیٹ بیورو رکن مسٹر بی وی راگھولو نے خواتین کو خود اختیار بنانے کے تعلق سے بات کرنے والی رکن پارلیمان تلنگانہ راشٹرا سمیتی شریمتی کے کویتا کو مشورہ دیا کہ وہ خواتین کی خود اختیاری کے مسئلہ پر بات کرنے سے قبل اپنے والد محترم و چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ سے بات کریں تو بہتر رہے گا ۔ سکریٹری تلنگانہ سی پی آئی ایم مسٹر ٹی ویرا بھدرم کی جاری مہاجنا پدیاترا کے سلسلہ میں منعقدہ جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر بی وی راگھولو نے کہا کہ ریاستی کابینہ میں کوئی ایک خاتون وزیر شامل نہیں ہے اس صورتحال کا مضحکہ اڑاتے ہوئے کہا کہ رکن پارلیمان شریمتی کے کویتا کو خواتین کے تعلق سے بات کرنے کا بنیادی حق ہی نہیں ہے اور سی پی آئی ایم کی جانب سے منظم کردہ مہا جنا پدیاترا پر بھی وزیر آبپاشی مسٹر ٹی ہریش راؤ کو بھی کوئی اخلاقی حق حاصل نہیں ہے بلکہ سستی شہرت کے حصول کے لیے من مانی باتیں کرنا اور سی پی آئی ایم قائدین کو تنقید کا نشانہ بنانا کوئی مناسب بات نہیں ہوگی ۔ رکن پولیٹ بیورو سی پی آئی ایم نے کہا کہ آبپاشی اسکیمات اور مختلف سنگ بنیادوں اور افتتاح وغیرہ سابق میں ان کی جانب سے کی گئی جدوجہد کا ہی نتیجہ ہیں ۔ مسٹر راگھولو نے چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کو سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ مسٹر چندر شیکھر راؤ تروپتی میں پانچ کروڑ مالیتی سونے کے تحائف لارڈ وینکٹیشورا مندر کو اپنی منت کو پوری کرنے کے لیے پیش کررہے ہیں ۔ لیکن مسٹر چندر شیکھر راؤ کو چاہئے کہ وہ سب سے قبل ریاست تلنگانہ کے عوام سے کئے گئے وعدوں و دئیے گئے تیقنات ( یعنی عوام سے مانگی ہوئی منت ) کو پورا کریں ۔ اسی دوران مہاجنا پدیاترا کرنے والے سکریٹری سی پی آئی ایم تلنگانہ کمیٹی مسٹر ٹی ویرا بھدرم نے بھی اپنا اظہار خیال کرتے ہوئے واضح طور پر کہا کہ ان کی پدیاترا کسی جماعت یا کسی حکومت کے خلاف نہیں ہے بلکہ ریاست کے عوام کو درپیش مسائل کی یکسوئی کے لیے حکومت پر دباؤ ڈالنے کے لیے ہی کی جارہی ہے ۔۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT