Thursday , June 29 2017
Home / شہر کی خبریں / دائرۃ المعارف میں بھگوت گیتا کے ترجمہ کے دوران قرآنی آیت کی توہین

دائرۃ المعارف میں بھگوت گیتا کے ترجمہ کے دوران قرآنی آیت کی توہین

محکمہ اقلیتی بہبود کی فوری مداخلت پر ٹائیٹل تبدیل، حکومت کو نگرانکار کمیٹی تشکیل دینے کی ضرورت

حیدرآباد۔/11 فبروری، ( سیاست نیوز) دائرۃ المعارف عثمانیہ یونیورسٹی کی جانب سے بھگوت گیتا کے ترجمہ کی اشاعت کے سلسلہ میں قرآنی آیت کی توہین کا معاملہ منظر عام پر آیا۔ مرکزی حکومت کی ’ ہماری دھروور‘ اسکیم کے تحت دائرۃ المعارف کی بعض اہم عربی کتابوں کے ترجمے شائع کئے گئے ان میں بھگوت گیتا کے علاوہ طب سے متعلق بعض کتابیں شامل ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ جب بھگوت گیتا کے ترجمہ کا ٹائٹل تیار کیا گیا تو اس میں دائرۃ المعارف کے ’ لوگو ‘ کو ’ رتھ‘ کی تصویر کے نیچے رکھا گیا جس سے قرآنی آیت کی توہین کا احتمال تھا۔ بتایا جاتا ہے کہ اس ٹائٹل کو منظوری دے دی گئی اور اس کے ساتھ بعض کتابیں بھی شائع کردی گئیں۔ اس سلسلہ میں جب محکمہ اقلیتی بہبود کے اعلیٰ عہدیداروں کو شکایت ملی تو انہوں نے ڈائرکٹر دائرۃ المعارف کو قابل اعتراض ٹائٹل فوری تبدیل کرنے کی ہدایت دی اور قرآنی آیت کے ساتھ موجود لوگو کو اوپری حصہ میں شامل کرنے پر زور دیا۔ بتایا جاتا ہے کہ عہدیداروں کی مداخلت کے بعد کتاب کے ٹائٹل کو تبدیل کیا گیا اور دائرۃ المعارف کا لوگو اوپری حصہ میں شامل کیا گیا ہے۔ لوگو میں قرآنی آیت ’’ فیھا کتب قیمۃ ‘‘ درج ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ دائرۃ المعارف کے حکام کی جانب سے مذہبی امور میں یکطرفہ فیصلوں کے سبب اس طرح کی صورتحال پیدا ہوئی ہے۔ واضح رہے کہ مرکزی حکومت نے دائرۃ المعارف کی ترقی اور تاریخی کتابوں کی دوبارہ اشاعت کیلئے 40 کروڑ سے زائد کے پراجکٹ کو منظوری دی ہے۔ اس رقم کی پہلی قسط جاری کی جاچکی ہے۔ دائرۃ المعارف کی کارکردگی بہتر بنانے کیلئے حکومت کو نگرانکار کمیٹی تشکیل دینی چاہیئے جو مختلف زبانوں کے اسکالرس اور اڈمنسٹریشن کے ماہرین پر مشتمل ہو۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT