Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / دارالشفاء پلے گراونڈ کنکریٹ میدان میں تبدیل

دارالشفاء پلے گراونڈ کنکریٹ میدان میں تبدیل

کھیل کود کے دوران کئی نوجوان زخمی، حکومت اور بلدیہ خواب غفلت میں
حیدرآباد ۔ 18 ۔ مئی : ( راست ) : گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کی زیر نگرانی چلائے جانے والے پلے گراونڈس کے حالات انتہائی ابتر ہوگئی ہیں ۔ شہر میں پلے گراونڈس لاپرواہی کا شکار ہوگئے ہیں جس کے باعث نوجوانوں میں کھیل کود کی صلاحیتیں ماند پڑ رہی ہیں ۔ جس کی ایک مثال دارالشفاء پلے گراونڈ کی ہے ۔ اس میدان پر کھیل کود سے زیادہ کھلاڑی خود کو زخمی کرلینے کے برابر ہے کیوں کہ گراونڈ کی سطح پر بہت سارے کنکریٹ ( پتھر کے زرے ) ابھرے ہوئے ہیں جہاں بلدیہ سے دی جانے والی کھیل کود کی تربیت سے استفادہ کرنے والے کمسن اور نوجوان بچے زخمی ہو رہے ہیں ۔ اس میدان پر گذشتہ 20 سال سے مختلف نوجوانوں کو کھیل کود کی تربیت دی جارہی ہے ۔اور کئی نوجوان ریاستی اور قومی سطح پر صلاحیت کا مظاہرہ کرچکے ہیں ۔ اس پلے گراونڈ کی صورتحال پر جناب میر علمدار نے بتایا کہ گراونڈ کو بہتر بنانے سے متعلق بلدیہ کو کئی مرتبہ توجہ دہانی کی گئی لیکن گراونڈ کی صورتحال میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ۔ ان کا کہنا ہے کہ خستہ حال گراونڈ کو بہتر بنانے کے لیے ان کی نمائندگیاں بے فیض ثابت ہورہی ہیں جب کہ کوئی عہدیدار اور نہ ہی کوئی سیاسی قائد اس کی ذمہ داری نبھانے کے لیے تیار ہے ۔ میر علمدار علی نے بتایا کہ نوجوانوں کو کھیل کود کے دوران زخمی ہوتے دیکھ کر تمام کھلاڑیوں کو یکجا کرکے گراونڈ میں بکھیرے ہوئے کنکریوں کو اکٹھا کیا ہے ۔ ان کا کہنا ہے اس گراونڈ پر 80 سے زائد نوجوان کھیل کود کی پریکٹس میں مصروف ہیں ۔ ہر سال اس گراونڈ پر پریکٹس کرنے والے 4 تا 5 کھلاڑی قومی سطح کے مسابقتی کھیلوں میں حصہ لیتے ہوئے اپنی صلاحیتوں کا لوہا منواتے ہیں تاہم گراونڈ کی موجودہ صورتحال سے ایسے حوصلہ مند نوجوانوں کے لیے قومی سطح ہی نہیں بلکہ ریاستی سطح کے مقابلوں تک رسائی ناممکن نظر آتی ہے ۔ کیوں کہ دوران پریکٹس انہیں کئی مشکلات کا سامنا ہے اور کھیل کود کے دوران وہ زخمی ہورہے ہیں ۔ علمدار نے مبینہ طور پر الزام لگایا کہ دارالشفاء پلے گراونڈ صرف کھیل کود کے لیے ہے لیکن یہاں پر غیر مجاز طریقہ سے گاڑیوں کی پارکنگ کی جارہی ہے ۔ انہوں نے وزیر بلدی نظم و نسق اور کمشنر بلدیہ سے خواہش کی کہ وہ دارالشفاء گراونڈ کی صورتحال پر توجہ دیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT