Thursday , August 17 2017
Home / دنیا / داعش نے شام میںمغویہ 300 ورکرس میں بیشتر کو رہا کردیا

داعش نے شام میںمغویہ 300 ورکرس میں بیشتر کو رہا کردیا

بیروت 9 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) دولت اسلامیہ گروپ نے دمشق کے قریب سے اغوا کئے گئے 300 سمنٹ ورکرس کے منجملہ بیشتر کو پوچھ تاچھ کے بعد رہا کردیا ہے اور چار مزدوروں کو ہلاک کردیا ہے ۔ دولت اسلامیہ گروپ نے ان مزدوروں سے یہ جاننا چاہا تھا کہ ان میں مسلمان کون ہیں۔ انہوں نے چار اقلیتی فرقہ دروز کے ارکان کو ہلاک کردیا ۔ شام کے ایک اپوزیشن حقوق انسانی گروپ اور ایک خبر رساں ادارے نے یہ اطلاع دی ۔ خْبر رساں ادارے کے عسکری گروپ سے روابط بتائے جاتے ہیں۔ یہ اطلاعات ان ورکرس کے اغوا کے دو دن بعد سامنے آئی ہیں۔ ان ورکرس و کنٹراکٹرس کو دارالحکومت دمشق کے شمال مشرق سے ان کے کام کے مقام سے اغوا کرلیا گیا تھا ۔ یہاں سرکاری افواج پر حیرت انگیز حملہ کرتے ہوئے یہ کارروائی کی گئی تھی ۔ برطانیہ سے کام کرنے والے حقوق انسانی کے ایک گروپ نے کہا کہ جن مزدوروں کو اغوا کیا گیا تھا انہیں رہا کردیا گیا ہے اور صرف 30 افراد کو ہنوز یرغمال بنائے رکھا گیا ہے جو سمنٹ فیکٹری میں گارڈز کا کام کر رہے تھے ۔ کہا گیا ہے کہ ان یرغمال افراد کے حشر کا پتہ نہیں چل سکا ہے ۔ آئی ایس سے روابط رکھنے والی نیوز ایجنسی آماق نے اطلاع دی ہے کہ 300 مغویہ مزدوروں کے منجملہ بیشتر کو رہا کردیا گیا ہے اور ان سے ان کے مذہب کے تعلق سے سوالات کئے گئے تھے اور یہ معلوم کرنے کی کوشش کی گئی تھی کہ آیا وہ حکومت کے حامی ہیں یا مخالف ۔ کہا گیا ہے کہ چار ورکرس کا فرقہ دروز سے تعلقتھا جنہیں ہلاک کردیا گیا ہے ۔ اس کے علاوہ 20 موافق حکومت گارڈز اور سکیوریٹی اہلکاروں کو یرغمال بنائے رکھا گیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT