Friday , August 18 2017
Home / Top Stories / درگاہ اجمیر شریف دھماکہ مقدمہ، اسیمانند اور 6 بری

درگاہ اجمیر شریف دھماکہ مقدمہ، اسیمانند اور 6 بری

شک کے فائدہ پر مقدمہ خارج، جئے پور کی عدالت کا فیصلہ

جئے پور۔ 8 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) درگاہ اجمیر شریف دھماکہ مقدمہ 2007ء میں 26 گواہوں کے منحرف ہوجانے کے بعد عدالت نے 3 افراد کو مجرم قرار دیا لیکن آر ایس ایس کے سابق رکن اسیمانند اور دیگر 6 افراد کو بری کردیا۔ مجرم قرار دیئے ہوئے افراد کی سزاء کا فیصلہ 16 مارچ کو سنایا جائے گا۔ این آئی اے کی عدالت کے جج دنیش گپتا نے آر ایس ایس کو سنیل جوشی اور دیویندر گپتا کو بم دھماکوں کی سازش کا مجرم قرار دیا۔ دو بموں میں سے ایک پھٹ نہیں پایا تھا۔ بھاویش بھائی پٹیل نے یہ بم نصب کئے تھے۔ عدالت نے اسیمانند کو جو سمجھوتہ ایکسپریس اور مکہ مسجد دھماکوں کے ملزم بھی تھے اور دیگر افراد کو شک کا فائدہ دیتے ہوئے بری کردیا۔ گپتا اور جوشی آر ایس ایس کے ارکان تھے اور مدھیہ پردیش کے شہروں اندور اور مئو میں 1998ء سے 2003ء تک ایک ساتھ کام کرچکے تھے۔ ایک فردجرم کے بموجب اجمیر کے متوطن گپتا جھارکھنڈ کے قہ جن پارہ کو 2003ء میں منتقل ہوکر 2008ء تک وہیں مقیم رہے تھے۔ دونوں ملزم ایک دوسرے کے ربط میں تھے اور کئی بار 2007ء میں جوشی کی موت سے قبل ملاقات کرچکے تھے۔ جوشی کو 29 ڈسمبر 2007ء کو گولی مار دی گئی تھی۔ سم کارڈ اور موبائیل فونس بموں کو دھماکہ سے اڑانے کیلئے جھارکھنڈ سے لائے گئے تھے جہاں گپتا آر ایس ایس کے پرچارک یا ضلعی سربراہ برائے تشہیر کی حیثیت سے کام کرچکا تھا۔ وکیل استغاثہ اشونی کمار شرما نے کہا کہ 26 گواہ جو اس مقدمہ میں اہم تھے، منحرف ہوگئے۔ عدالت اسیمانند کے اعترافی بیان میں انہیں مجرم قرار دینے کیلئے کافی ثبوت تلاش نہ کرسکی۔ اسیمانند نے اعترافی بیان دینے کے تین ماہ بعد اس سے انحراف کیا تھا۔ اسیمانند کے وکیل جگدیش رانا نے کہا کہ اسیمانند سیاسی سازش کا شکار ہے۔ مخصوص طبقہ کے ایک شخص کو مخصوص نوعیت کے جرم میں پھنسانے کی سازش کی گئی تھی۔ 13 ملزموں میں سے 3 ہنوز مفرور ہیں۔ دائیں بازو کے انتہاء پسند گروپ ابھینو بھارت کے اسیمانند ڈسمبر 2010ء سے جیل میں تھے جبکہ انہیں مکہ مسجد بم دھماکہ کے مقدمہ میں گرفتار کیا گیا تھا۔ یہ دھماکہ حیدرآباد کی مکہ مسجد میں 18 مئی 2007ء کو ہوا تھا جس میں 14 افراد ہلاک ہوئے تھے۔ اسیمانند کو 2007ء کے سمجھوتہ مقدمہ میں بھی الزامات کا سامنا ہے جو 18 فبروری 2007ء کو ہوا تھا اور جس میں 68 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

TOPPOPULARRECENT