Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / درگاہ شاہ خاموش ؒکے متولی کو وجہ نمائی نوٹس کا مقدمہ

درگاہ شاہ خاموش ؒکے متولی کو وجہ نمائی نوٹس کا مقدمہ

حیدرآباد۔/17مارچ، ( سیاست نیوز) حیدرآباد ہائی کورٹ کے ڈیویژن بنچ نے مولانا سید شاہ اکبر نظام الدین حسینی کی وقف بورڈکے خلاف دائر کردہ اپیل کی اس ہدایت کے ساتھ یکسوئی کردی کہ درخواست گذار کو وجہ نمائی نوٹس کی وضاحت وقف بورڈ سے کرنی چاہیئے۔ کارگذار چیف جسٹس دلیپ ڈی بھوسلے اور جسٹس پی نوین راؤ پر مشتمل ڈیویژن بنچ نے یہ فیصلہ سنایا۔ وقف بورڈ نے 29جون 2015کو وجہ نمائی نوٹس جاری کرتے ہوئے پوچھا تھا کہ کیوں نہ انہیں متولی کے عہدہ سے ہٹادیا جائے۔ درگاہ حضرت شاہ خاموش ؒ نامپلی اور درگاہ حضرت پیراں حسینی ؒ احاطہ امیر علی صاحب افضل گنج کے متولی کے عہدہ سے پہلے ہی معطل کیا جاچکا ہے۔ وقف بورڈ نے وجہ نمائی نوٹس کے ساتھ تحقیقاتی رپورٹ بھی منسلک کرتے ہوئے اندرون 15 یوم جواب دینے کی خواہش کی تھی۔ درخواست گذار نے وقف بورڈ کو جواب دینے کے بجائے ہائی کورٹ سے رجوع ہونے کو ترجیح دی۔ ہائی کورٹ کی ہدایت پر وقف بورڈ کو وجہ نمائی نوٹس کا جواب داخل کیا گیا۔ فیصلہ میں کہا گیا ہے کہ درخواست گذار کے وکیل نے وقف ایکٹ کے بعض قواعد کا حوالہ دیتے ہوئے استدلال پیش کیا کہ وجہ نمائی نوٹس کی اجرائی وقف بورڈ کے دائرہ اختیار میں نہیں ہے۔ اس مسئلہ پر ہائی کورٹ نے مقدمہ کی یکسوئی کرتے ہوئے درخواست گذار کو اختیار دیا ہے کہ اگر وہ چاہیں تو وقف بورڈ کو زائد جواب اور اپنے حق میں دستاویزات داخل کرسکتے ہیں۔ ہائی کورٹ نے وجہ نمائی نوٹس کی اجرائی کے سلسلہ میں وقف بورڈ کے دائرہ اختیار کی وضاحت بھی وقف بورڈ سے کرنے کی صلاح دی ہے۔ عدالت نے وقف بورڈ کو وجہ نمائی نوٹس پر اندرون پندرہ یوم کارروائی کی ہدایت دی ہے۔

TOPPOPULARRECENT