Wednesday , September 20 2017
Home / ہندوستان / دس سال میں 7.5 لاکھ اقلیتوں کو ہندو بنایا گیا : توگاڑیہ

دس سال میں 7.5 لاکھ اقلیتوں کو ہندو بنایا گیا : توگاڑیہ

سورت ، 8 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) وشوا ہندو پریشد (وی ایچ پی) لیڈر پراوین توگاڑیہ نے آج دعویٰ کیا کہ ان کی تنظیم نے گزشتہ دس برسوں میں زائد از پانچ لاکھ عیسائیوں اور 2.5 لاکھ مسلمانوں کو ہندومت کی طرف واپس بلایا ہے۔ آج یہاں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے توگاڑیہ نے بڑے پیمانے پر مہم چلانے کی اپیل بھی کی تاکہ اس ’’گھر واپسی‘‘ کو جاری رکھتے ہوئے ہندوستان میں ہندومت کو بچایا جاسکے۔ وی ایچ پی کے بین الاقوامی کارگزار صدر توگاڑیہ نے کہا: ’’گزشتہ دس برسوں میں ہم نے زائد از پانچ لاکھ عیسائیوں اور 2.5 لاکھ مسلمانوں کی گھر واپسی کرائی ہے۔ گھر واپسی کے معاملے میں ہماری شرح لگ بھگ 15,000 فی سال رہی ہے۔ مگر گزشتہ سال ہم نے 40,000 کے نشانے کو عبور کرلیا، جو آر ایس ایس کے اعداد وشمار سے ہٹ کر ہے۔‘‘ توگاڑیہ نے جو وی ایچ پی کے فنڈ اکٹھا کرنے کے ایونٹ میں حصہ لینے یہاں آئے، کہا کہ ’’اگر ہندوؤں کو ہندوستان میں اکثریت میں رہنا اور ہمارے مذہب کو بچانا ہو تو ہمیں گھر واپسی کے مزید کئی دور منعقد کرتے ہوئے کروڑہا دیگر کو ہمارے مذہب میں داخل کرانا ہوگا‘‘۔ اس کے بعد میڈیا کے ساتھ اپنی مختصر گفتگو میں دائیں بازو کے لیڈر نے یہ مطالبہ بھی کیا کہ پاکستان کے تمام ہندوؤں کو ہندوستانی شہریت دینا چاہئے۔

TOPPOPULARRECENT