Thursday , September 21 2017
Home / کھیل کی خبریں / دس کروڑ ڈالر کے اسکینڈل میں بلاٹر کا کیا کردار تھا؟

دس کروڑ ڈالر کے اسکینڈل میں بلاٹر کا کیا کردار تھا؟

لندن ، 8 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کا وفاقی تحقیقاتی ادارہ ایف بی آئی یہ تحقیقات کر رہا ہے کہ دس کروڑ ڈالر رشوت کے اسکینڈل میں فٹبال کی عالمی تنظیم فیفا کے صدر سپ بلاٹر کا کیا کردار تھا۔ کھیلوں کی مارکیٹنگ کمپنی آئی ایس ایل نے دس کروڑ ڈالر فیفا کے سابق صدر جواؤ ہیولینج اور سابق ایگزیکٹیو ریکارڈو ٹیزیریا کو دیئے تھے۔ اس کے بدلے میں انھیں 1990ء کی دہائی میں مارکیٹنگ رائٹس اور سود مند گرانٹ ملی تھی۔ فیفا کے صدر بلاٹر نے اس اسکینڈل سے لاعلمی کا اظہار کیا تھا اور اس کے خلاف کوئی کارروائی نہ کرنے کی ہدایت بھی دی تھی۔ برطانوی نشریاتی ادارہ کے بموجب انھیں ایف بی آئی سے ایک خط حاصل ہوا ہے جس سے بلاٹر کے انکار پر شک پیدا ہوتا ہے۔ اس خط میں ایف بی آئی نے سوئس حکام سے درخواست کی گئی ہے کہ وہ ان کی تحقیقات میں مدد کریں۔ اور اس سے قبل آئی ایس کی رشوت خوری کی تحقیقاتی رپورٹ دیں۔ اس کے علاوہ یہ بھی بتایا گیا ہے کہ بلاٹر کے متعلق جواؤ ہیولینج کے بیان کو بھی پراسکیوٹر دیکھ رہا ہے۔ 2010 ء میں بلاٹر نے سوئس حکام کی جانب سے ہیولینج اور ٹیزیریا کے خلاف کی گئی تحقیقات کی رپورٹ پر پردہ ڈال دیا تھا۔ 2013ء میں بلاٹر نے تحقیقاتی کمیٹی کو بتایا کہ وہ کوئی بھی رشوت خوری کے عمل سے لاعلم ہیں۔ بلاٹر نے فروری 2015ء میں خود پر لگے الزامات کو ماننے سے انکار کیا اور کہا تھا کہ وہ فیفا کی صدارت چھوڑ دیں گے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT