Saturday , September 23 2017
Home / شہر کی خبریں / دفتر اقلیتی فینانس کارپوریشن میں خود عہدیداروں و ملازمین کیلئے بدشگونی!

دفتر اقلیتی فینانس کارپوریشن میں خود عہدیداروں و ملازمین کیلئے بدشگونی!

جادو ٹونے کی سرگرمیوں سے خوف کا ماحول ، ایک دوسرے کے خلاف انتقامی حربے
حیدرآباد۔23 اگست (سیاست نیوز) سرکاری دفاتر میں واستو اور توہم پرستی عام بات ہے لیکن اگر اقلیتی ادارے اس طرح کی خرافات سے متاثر ہوں تو یقیناً حیرت کی بات ہے۔ حج ہائوز میں واقع اقلیتی فینانس کارپوریشن کا دفتر بتایا جاتا ہے کہ خود عہدیداروں اور ملازمین کے لیے بدشگونی کی علامت بن چکا ہے کیوں کہ دفتر میں گزشتہ کئی برسوں سے چل رہی جادو ٹونے کی سرگرمیوں نے ہر کسی میں خوف کا ماحول پیدا کردیا ہے۔ صورتحال یہاں تک پہنچ گئی کہ عہدیدار اور ملازم دفتر پہنچنے پر اپنے چیمبر اور اطراف کے علاقے کی تلاشی پر مجبور ہیں کیوں کہ کوئی نہ کوئی مشتبہ شئے انہیں دکھائی دیتی ہے جو ان کے مخالف کی جانب سے نقصان پہنچانے کے لیے رکھی ہوتی ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ اس طرح کی سرگرمیاں گزشتہ کئی برسوں سے جاری ہیں اور ملازمین و عہدیدار ہر سطح پر ان سرگرمیوں سے نہ صرف متاثر ہیں بلکہ وہ اپنے مخالفین کے جادو کے توڑ کے لیے جوابی حربے استعمال کررہے ہیں۔ اس طرح اقلیتی بہبود کا یہ دفتر ملازمین اور عہدیداروں کے آپسی جادئوی ٹکرائو کا مرکز بن چکا ہے اور اس سے نجات پانا آسان نظر نہیں آتا۔ ہر شخص اپنے بچائو کے لیے کچھ نہ کچھ تعویزات، عملیات اور جھاڑ پھونک کا سہارا لے رہے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق بعض عہدیداروں نے اپنی گرفت مضبوط بنانے کے لیے شہر کے عاملوں کا سہارا لیتے ہوئے روزانہ ان کے بتائے ہوئے طریقہ سے دفتر میں داخلہ کے ساتھ ہی مختلف امور انجام دے رہے ہیں۔ دفتر میں کام کرنے والے درجہ چہارم ملازمین کو ان حالات میں ڈر و خوف کا سامنا ہے کیوں کہ صفائی کے موقع پر انہیں مشتبہ اشیاء کو ہٹانا پڑتا ہے۔ انہیں ڈر ہے کہ اس طرح کی اشیاء کو چھینے سے کہیں وہ اس کے اثر میں نہ آجائیں۔ وقفہ وقفہ سے دفتر کے مختلف گوشوں میں دھواں دیا جاتا ہے اگرچہ اس سلسلہ میں کوئی بھی عہدیدار کھل کر اظہار خیال کرنے کے لیے تیار نہیں تاہم انہوں نے اس بات کا اعتراف کیا کہ دفتر عملیات کا گڑھ بن چکا ہے اور خاص طور پر گزشتہ تین برسوں میں اس طرح کی سرگرمیوں میں اضافہ ہوا ہے۔

شبہ کیا جارہا ہے کہ بعض عہدیداروں کو ترقی سے روکنے کے لیے بھی عملیات کا سہارا لیا گیا تاکہ وہ بیمار پڑ جائیں اور دفتر حاضری سے قاصر رہیں۔ اعلی عہدیداروں کو اپنے قابو میں رکھنے کے لیے بھی عملیات کا سہارا لیئے جانے کی اطلاعات ملی ہیں۔ دفتری اوقات کے بعد مشتبہ افراد کے ذریعہ اپنے مخالفین کے چیمبرس کے قریب جادو سے متعلق اشیاء پھیلادی جاتی ہیں۔ کسی عہدیدار کو اپنے قابو میں کرنے کے لیے اس کے چیمبر میں اسی طرح کی اشیاء رکھنے کی افواہیں گرم ہیں۔ عہدیدار بھلے ہی کھل کر اس بارے میں اظہار خیال نہ کریں لیکن ان کے رویہ اور سرگرمیوں سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ دال میں کچھ نہ کچھ کالا ہے۔ بظاہر تو ہر کوئی ایک دوسرے سے خوشگوار انداز میں ملاقات کرتا دکھائی دے گا لیکن پیٹھ پیچھے مخالفت میں اسے زیر کرنے کے لیے عملیات کا سہارا لیا جارہا ہے۔ کارپوریشن کے دفتر میں ایک ایسا چیمبر ہے جو عملیات کا گڑھ مانا جاتا ہے اور کوئی بھی عہدیدار اس چیمبر میں اپنا آفس قائم کرنے کے لیے تیار نہیں۔ کارپوریشن کے سارے دفتر میں یہ چیمبر اگرچہ سہولتوں کے اعتبار سے پر تعیش اور جگہ کے اعتبار سے کشادہ ہے لیکن عملیات کے خوف نے عہدیداروں کو اس قدر جکڑدیا ہے کہ وہ اس چیمبر کی طرف دیکھنے بھی تیار نہیں۔ مذکورہ چیمبر کو اسٹور روم میں تبدیل کردیا۔ اس بارے میں جب صفائی عملے سے دریافت کیا گیا تو ان کا کہنا تھا کہ وہ خود بھی سامان کی منتقلی کے وقت خوف کے عالم میں ہوتے ہیں۔ اس چیمبر میں کئی برسوں تک خدمات انجام دینے والے عہدیدار کو عملیات کا ماہر سمجھا جاتا تھا اور جب تک وہ شخص کارپوریشن میں برسر خدمت رہا اس کا سکہ چلتا رہا۔ اعلی عہدیدار بھلے ہی کوئی ہو لیکن چلتی تو اسی شخص کی تھی اور اس کے اشارے اور مشورے کے بغیر اعلی عہدیدار کوئی بھی قدم نہیں اٹھاتے تھے۔ الغرض اپنے تحفظ اور دوسروں کو نقصان پہنچانے کے مقصد سے شروع ہوئی عملیات کی سرگرمیاں آج سارے دفتر پر حاوی ہوچکی ہیں اور ملازمین میں خوف کا ماحول ہے۔ حالیہ عرصہ میں کارپوریشن کے دو چیمبرس کی تزئین نو کا کام انجام دیا گیا اور بتایا جاتا ہے کہ اس کام کے دوران بھی بعض اشیاء خفیہ طور پر رکھ دی گئی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT