Friday , September 22 2017
Home / Top Stories / دلت لڑکی کی موت کی سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ

دلت لڑکی کی موت کی سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ

JAIPUR, APR 13 (UNI)- Congress Vice President Rahul Gandhi with other senior party leaders during the Dalit Sammelan on the eve 125 th birth anniversary of Dr Bhimrao Ambedkar, in Jaipur on Wednesday. UNI PHOTO-77u

مقتول لڑکی کے ارکانِ خاندان سے ملاقات کے بعد نائب صدر کانگریس کا بیان
بارمیر۔13 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) نائب صدر کانگریس راہول گاندھی نے آج الزام عائد کیا کہ کوششیں کی جارہی ہیں کہ ایک 17 سالہ دلت لڑکی کی عصمت ریزی اور قتل کے معاملے کو دَبا دیا جائے۔ لڑکی کی نعش بیکانیر سے دستیاب ہوئی تھیں۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ اس واقعہ کی سی بی آئی تحقیقات کروائی جانی چاہئے تاکہ مقتول لڑکی کے ارکان خاندان کے ساتھ انصاف ہوسکے۔ وہ سوگوار خاندان سے ترموٹو دیہات میں ملاقات کے بعد بیان دے رہے تھے۔ دورہ میں ان کے ہمراہ صدر پردیش کانگریس سچن پائیلٹ، سابق رکن پارلیمان ہریش چودھری اور دیگر قائدین تھے۔ انہوں نے کہا کہ لڑکی کے والد پولیس کی کارروائی سے مطمئن نہیں ہیں۔ راہول گاندھی نے کہا کہ وہ لڑکی کے والد اور دیگر ارکان خاندان سے ملاقات کرچکے ہیں جو اس معاملے کی سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ کررہے ہیں۔ وہ پولیس کارروائی سے مطمئن نہیں ہیں۔ لڑکی کا خاندان سمجھتا ہے کہ اُن کے ساتھ ناانصافی کی گئی ہے۔ وہ انصاف چاہتے ہیں۔ ایسا سی بی آئی تحقیقات کے ذریعہ ہی ہوسکتا ہے۔ راہول گاندھی لڑکی کے ارکان خاندان سے آدھے گھنٹہ طویل ملاقات کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ وہ ملک کی بیٹی تھی جیسا کہ روہت معاملہ کو دبا دیا گیا ، اس معاملے کو بھی دبا دینے کی کوشش کی جارہی ہے۔ وہ چیف منسٹر راجستھان سے کہنا چاہتے ہیں کہ واحد طریقہ لڑکی اور اس کے خاندان کے ساتھ انصاف کا یہی ہے کہ معاملہ کی سی بی آئی تحقیقات کروائی جائیں۔ انہوں نے ایک کمرہ والے مکان میں جس کے روبرو ایک ڈیرہ لگایا گیا تھا ، مقامی افراد اور لڑکی کے رشتہ داروں کے ساتھ ملاقات کی ۔ انہوں نے البم بھی دیکھا جس میں لڑکی کی تصویریں تھیں جو 30 مارچ کو پانی کی ایک ٹانکی سے بیکانیر کے ایک تعلیمی ادارہ میں مردہ دستیاب ہوئی تھی۔ وہ لڑکی یہاں بی ایس ٹی سی کی تربیت حاصل کررہی تھی تاکہ ٹیچر بن سکے۔ راہول گاندھی بذریعہ کار دیہات پہونچے ۔ قبل ازیں وہ بذریعہ طیارہ اُترلائی ایربیس بارمیر پہونچے تھے۔ لڑکی کے والد مہیندر رام نے معاملے کی سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ کیا اور کہا کہ ریاستی پولیس کی تحقیقات سے وہ مطمئن نہیں ہیں۔

TOPPOPULARRECENT