Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / دلسکھ نگر بم دھماکہ مقدمہ میں انڈین مجاہدین کے 5 ارکان مجرم

دلسکھ نگر بم دھماکہ مقدمہ میں انڈین مجاہدین کے 5 ارکان مجرم

این آئی اے خصوصی عدالت کا فیصلہ، سزا کا پیر کو تعین
حیدرآباد /13 ڈسمبر ( سیاست نیوز ) دلسکھ نگر جڑواں بم دھماکے کیس میں ملوث 5 انڈین مجاہدین کے مبینہ ارکان کو نیشنل انوسٹیگیشن ایجنسی ( این آئی اے ) کی خصوصی عدالت نے آج انہیں مجرم قرار دیا جبکہ سزا کی مدت کا تعین 19 ڈسمبر کو ہوگا ۔ چرلہ پلی سنٹرل جیل میں قائم کی گئی این آئی اے خصوصی عدالت نے آج اپنا فیصلہ سناتے ہوئے 21 فروری سال 2013 کو علاقہ دلسکھ نگر میں پیش آئے دو طاقتور بم دھماکوں کیس کے ملزمین و انڈین مجاہدین کے ارکان اسد اللہ اختر عرف ہڈی ، ضیاء الرحمن عرف وقاص ، محمد تحسین اختر عرف مونو ، محمد احمد سدی بپا زرار عرف یسین بھٹکل اور اعجاز سعید شیخ عرف اعجاز شیخ کو تعزیرات ہند ، ایکسپلوزیو ایکٹ اور انسداد غیر قانونی سرگرمیاں قانون میں قصوروار پائے جانے کے بعد انہیں آج صبح مجرم قرار دیا ۔ واضح رہے کہ دلسکھ نگر جڑواں بم دھماکوں کے نتیجہ میں 18 افراد بشمول ایک حاملہ خاتون ہلاک ہوگئے تھے جبکہ 131 افراد زخمی ہوگئے ۔ اس واقعہ سے متعلق دو علحدہ مقدمات سرورنگر اور ملک پیٹ پولیس اسٹیشنس میں درج کئے گئے تھے لیکن مرکزی وزارت داخلہ کے احکام کے بعد بم دھماکوں کیس کی تحقیقات کو قومی تحقیقاتی ایجنسی کے حوالے کردیا گیا تھا ۔ این آئی اے نے اگست سال 2013 میں بم دھماکوں کیس کے دو کلیدی ملزمین و انڈین مجاہدین کے اہم ارکان یسین بھٹکل اور اسدالاختر کو نیپال ہند سرحد پر گرفتار کرلیا تھا ۔ بعد ازاں تحقیقاتی ایجنسی نے بہار کے تحسین اختر پاکستانی شہری وقاص اور مہاراشٹرا کے عزیز شیخ کو گرفتار کرتے ہوئے انہیں حیدرآباد کی این آئی اے کی خصوصی عدالت میں پیش کیا تھا ۔ ملزمین کے خلاف سنگین دفعات بشمول ملک سے جنگ چھیڑنے اور انسداد غیر قانونی سرگرمیاں ایکٹ کے تحت چارج شیٹ داخل کی گئی تھی اور بم دھماکوں کے اصل ماسٹر مائنڈ محمد ریاض بھٹکل کو مفرور قرار دیا ۔ ابتداء میں کیس کی سماعت رنگاریڈی کورٹ واقع کتہ پیٹ میں ہوئی لیکن یسین بھٹکل کے عدالت سے فرار ہونے کے خدشہ اور دیگر انٹلیجنس اطلاعات کے پیش نظر مقدمہ کی سماعت کو احاطہ چرلہ پلی جیل میں چلانے کا فیصلہ کیا گیا ۔ اس کیس میں جملہ 157 گواہوں کا معائنہ کیا گیا ۔ این آئی اے کی خصوصی عدالت نے تمام ملزمین کو مجرم قرار دیتے ہوئے سزا کی مدت کے تعین کو 19 ڈسمبر بروز پیر ملتوی کردیا ۔

TOPPOPULARRECENT