Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / دمشق کے قریب 22فضائی حملے ، جنگ بندی کا خاتمہ

دمشق کے قریب 22فضائی حملے ، جنگ بندی کا خاتمہ

جنگ بندی کی خلاف ورزیاںسنگین نتائج کی حامل ،وزیر خارجہ امریکہ جان کیری کا بیان
بیروت۔ 4 مئی (سیاست ڈاٹ کام) دمشق کے قریب مشرق میں باغیوں کے مستحکم گڑھ پر آج کم از کم 22 فضائی حملے کئے گئے جس کی وجہ سے جنگ بندی کا راتوں رات خاتمہ ہوگیا۔ شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق کے بموجب شبہ ہے کہ یہ فضائی حملے حکومت شام کی جانب سے دمشق کے مشرق میں علاقہ مشرقی غوتہ پر کئے گئے جبکہ باغیوں کے ساتھ جھڑپیں شروع ہوگئیں۔ یہ لڑائی قصبہ دیرالاسافیر کے کئے گئے۔ 33 شہری بشمول 12 بچے ہلاک ہوگئے۔ فوری طور پر تازہ لڑائی میں انسانی جانوں کے ضائع ہونے کے بارے میں کوئی اطلاع نہیں ملی۔ مجلس بلدیہ ڈوما نے توثیق کی کہ جھڑپیں اور فضائی حملوں سے مشرق غوتہ دہل کر رہ گیا۔ دمشق کے مشرق میں یہ دیہی علاقوں اور چھوٹے قصبوں کی ایک پٹی ہے جسے باغیوں کا مستحکم گڑھ سمجھا جاتا ہے۔ واشنگٹن سے موصولہ اطلاع کے بموجب امریکہ کے وزیر خارجہ جان کیری نے کہا ہے کہ شام کے صدر بشار الاسد کو حلب اور دوسرے شہروں میں امریکہ اور روس کی جانب سے متفقہ طور پر جنگ بندی کے اعلان کو تسلیم کرنا پڑے گا۔ اگر جنگ بندی کی خلاف ورزی کی گئی تو اس کے سنگین نتائج سامنے آئیں گے جس کی ذمہ داری اسد حکومت پر عائد ہوگی۔

واشنگٹن میں محکمہ خارجہ کے ہیڈ کواٹرمیں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے جان کیری نے کہا کہ ’اگر بشار الاسد کی جانب سے شام میں جنگ بندی کی مسلسل خلاف ورزیاں کی جاتی رہیں تواس کے سنگین نتائج واضح ہوں گے۔ جنگ بندی ختم ہوجائے گی اور ملک ایک بار پھر جنگ کی لپیٹ میں آجائے گا‘۔جنیوا میں امن مذاکرات سے واپسی پر گفتگو کرتے ہوئے جان کیری کا کہنا تھا کہ میں سمجھتا ہوں کہ روس شام میں جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کا حامی ہے یا بشار الاسد جنگ بندی کی خلاف روزی کرکے کوئی فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔امریکی وزیر خارجہ نے کہا کہ جنگ بندی کی خلاف ورزی کے سنگین نتائج سامنے آئیں گے تاہم انہوں نے یہ وضاحت نہیں کی کہ آیا سنگین نتائج کس نوعیت کے ہوسکتے ہیں۔ البتہ ان کا کہنا تھا کہ ان خطرناک نتائج پر روس اور امریکہ کے درمیان بات چیت ہوچکی ہے اور یہ دونوں ملک ہی مل کر شام کے مستقبل کا فیصلہ کریں گے۔انہوں نے کہا کہ اس وقت تمام ملکوں کی پوری کوشش شام میں جنگ بندی کا عملی نفاذ ہے۔ ہم سب حلب کا تحفظ چاہتے ہیں۔ واشنگٹن اور ماسکو کے درمیان حلب میں نئی جنگ بندی پر تفصیلی بات چیت اور اتفاق ہوچکا ہے۔ اب بشار الاسد کو بھی اس سے اتفاق کرنا ہوگا۔جان کیری کا کہنا تھا کہ امریکہ اور روس کی مذاکراتی ٹیموں نے پچھلے 48 گھنٹوں میں جو کچھ بھی صلاح مشورہ کیا ہے۔ اسے ہم عملی شکل میں نافذ کرنا چاہتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT