Friday , August 18 2017
Home / کھیل کی خبریں / دورہ ٔپاکستان 2009،سنگا کارا کو لنکا میڈیا کی حمایت

دورہ ٔپاکستان 2009،سنگا کارا کو لنکا میڈیا کی حمایت

کولمبو۔ 18جولائی (سیاست ڈاٹ کام ) سری لنکائی میڈیا بھی دورۂ پاکستان 2009کے حوالے سے کمار سنگا کارا کا ہمنوا بن گیا۔کرکٹرز ایجنٹس کے حوالے سے اختلافی صورتحال پیدا ہونے کے بعد کمار سنگاکارا اور ارجنا رانا تنگا میں لفظی جنگ جاری ہے۔ سنگاکارا نے الزام لگایا کہ راناتنگا نے2009میں بورڈ کی عبوری کمیٹی کے سربراہ کی حیثیت سے کرکٹرز کے تحفظات نظر انداز کرتے ہوئے ٹیم کو پاکستان بھجوانے کا فیصلہ کیا جو لاہور میں دہشت گردوں کے حملے کا نشانہ بنی۔ اس واقعہ کی تحقیقات کروائی جائے۔جواب میں راناتنگا نے کمار سنگا کارا کی قیادت میں ورلڈکپ 2011 فائنل میں شکست کی چھان بین کا مطالبہ کردیا۔اب سنگا کارا کی حمایت کرتے ہوئے ایک مقامی خبر رساں ادارے نے کہا ہے کہ کرکٹرز نے تحریری طور پر تحفظات کا اظہار کیا تھا اور کہا تھا کہ پہلے آزادانہ کام کرنیوالی سیکیورٹی فرم کی مدد سے حالات کا جائزہ لیا جائے ۔کھلاڑیوں کی انشورنس کروانے کیساتھ مقابلوں کی تعداد میں کمی اور سیریز کے درمیان میں ایک ہفتے کا وقفہ رکھا جائے۔ سری لنکا کرکٹ کی عبوری کمیٹی کے سربراہ ارجنا رانا تنگا نے اتفاق نہ کرتے ہوئے ٹیم روانہ کرنے کا فیصلہ کردیا۔ بورڈ نے جواب دیا کہ پاکستان میں سیکیورٹی مسائل نہیں،کھلاڑی اپنے طور پر انشورنس کروا لیں،دورہ مختصر ہوگا نہ افراد خاندان کیساتھ وقت گزارنے کیلئے ایک ہفتے کا وقفہ دیا جائیگا کیونکہ میزبان ملک مزید 2 ونڈے کھیلنا چاہتا ہے۔یاد رہے کہ ارجنارانا تنگا کو بعدازاں عبوری کمیٹی کی سربراہی سے ہٹا دیا گیا تھا لیکن سابق کپتان اس سے قبل ٹیم پاکستان بھجوانے کا فیصلہ کرچکے تھے۔
ہیلپ لائن قائم کیا جائے:بندرا کی تجویز

نئی دہلی۔ 18جولائی (سیاست ڈاٹ کام ) ہندوستانی کھلاڑیوں کو بیرون ملک کے دوروں پر مالی پریشانی سے بچانے کیلئے ہیلپ لائن کے قیام کی تجویز پیش کی گئی ہے۔ شوٹر ابھینو بندرا نے وزیرکھیل وجے گوئل کو مکتوب لکھ کر ہیلپ لائن کے قیام سمیت دیگر اہم تجاویز دی ہیں۔ واضح رہے کہ اسپورٹس اتھارٹی آف انڈیا کی جانب سے بروقت فنڈز کے عدم اجرا پر پیرا سوئمنگ چیمپئن شپ میں حصہ لینے والی پیراک کنچن مالا پانڈے کو جرمنی میں پیسوں کی تنگی اٹھانا پڑی تھی۔

TOPPOPULARRECENT