Tuesday , August 22 2017
Home / ہندوستان / دولت اسلامیہ کیخلاف جنگ سے ہندوستان میں فرقہ وارانہ تشددکا اندیشہ : مرکزی وزارت داخلہ

دولت اسلامیہ کیخلاف جنگ سے ہندوستان میں فرقہ وارانہ تشددکا اندیشہ : مرکزی وزارت داخلہ

نئی دہلی ۔ 17 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) ہندوستانیوں کو عراق یا شام میں تنازعہ میں حصہ لینے کی اجازت دینے پر ہندوستان میں فرقہ وارانہ تشدد پھوٹ پڑنے کا قوی اندیشہ ہے اور یہ دہشت گردی کو فروغ دینے کے مترادف ہوگا۔ دہلی ہائیکورٹ نے ایک حلف نامہ داخل کرتے ہوئے وزارت داخلہ نے کہا کہ کسی بھی فرقہ کو شام یا عراق کے تنازعہ میں حصہ لینے کی اجازت دینے کا نتیجہ ہندوستان میں دیگر فرقوں پر مرتب ہوگا۔ ہندوستان میں فرقہ وارانہ تشدد بھڑک اٹھے گا جو قوم کے مفاد میں نہیں ہے۔ وزارت داخلہ نے کہا کہ انجمن حیدری کے ایک 6 رکنی وفد کو عراق جانے سے روک دیا گیا جس کی بنیادی وجہ عراق میں مقدس مقامات کے تحفظ کیلئے مسلمہ رضاکاروں کو روانہ کرنے کے قواعد و شرائط پر تبادلہ خیال تھا۔ وزارت داخلہ نے کہا کہ کسی بھی ہندوستانی شہری کو کسی بیرونی ملک میں معلنہ مقصد کے ساتھ کسی بھی تنازعہ میں شرکت کی اجازت نہیں دے سکتی کیونکہ یہ ایسے افراد کی حفاظت اور صیانت کا سوال ہے جو خطرہ سے دوچار ہوجائیں گے اور اس کے منفی اثرات بیرونی ممالک سے ہندوستان کے دوستانہ تعلقات پر مرتب ہوں گے۔

TOPPOPULARRECENT