Sunday , August 20 2017
Home / عرب دنیا / دولت اسلامیہ کی جنگ میںہندوستانی شامل نہیں

دولت اسلامیہ کی جنگ میںہندوستانی شامل نہیں

دولت اسلامیہ مخالف حشد گروپ کے دو اعلیٰ سطحی کمانڈرس کی پریس کانفرنس
بغداد۔14فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) دنیا بھر کے سینکڑوں عسکریت پسند بشمول پاکستان دولت اسلامیہ کے جنگجوؤں کے ساتھ عراق میں جنگ کررہے ہیں ۔ اعلیٰ سطحی فوجی کمانڈر کے بموجب انہیں اس فوج میں ہندوستانیوں کی شمولیت کی کوئی اطلاع نہیں ملی ہے ۔ مقبول عام متحرک افواج کے سینئر کمانڈر برائے العباس بریگیڈ شیخ میسم زیدی کے بموجب کئی ممالک جیسے پاکستان ‘ افغانستان اور وسط ایشیاء کے جنگجو عراق میں جنگ کررہے ہیں ۔ ہندوستانیوں کی دولت اسلامیہ کی صفوں میں شمولیت کے بارے میں سوال کا جواب دیتے ہوئے کمانڈر نے جو دہشت گردوں سے صلاح الدین ‘ عنبر ‘ بائیجی جیسے علاقوں میں جنگ کرچکے ہیں کہا کہ انہیں ایسی کوئی اطلاع نہیںملی ہے ۔ اسی طرح کے ایک اور سوال کا جواب دیتے ہوئے ایک اور اعلیٰ سطحی کمانڈر نے بھی کہا کہ انہیں ہندوستانیوں کی عراق کی سرزمین پر موجودگی کی کوئی اطلاع نہیں ہے ۔ مشیر برائے حشد کی بدربریگیڈ کے سربراہ حاجی العمری نے دورہ کرنے والے ہندوستانی صحافیوں کے ایک گروپ سے کہا کہ تازہ ترین ذرائع ابلاغ کی اطلاع کے بموجب بعض ہندوستانی شام کی جنگ جو دولت اسلامیہ کے ساتھ کی گئی تھی ہلاک ہوئے ۔ زیدی جس کے بریگیڈ کے 50فوجی ہلاک ہوچکے تھے کہا کہ یہ کسی ایک ملک کیلئے ناممکن ہے کہ دولتاسلامیہ کو روک سکے ۔ دنیا بھر کے ممالک کو متحد ہوکر خوفناک دہشت گرد گروپ سے مقابلہ کرناچاہیئے ۔ انہوں نے پریس کانفرنس میں کہا کہ دولت اسلامیہ ایک بے رحم دہشت گرد گروپ ہے اور یہ پوری دنیا کیلئے ایک خطرہ ہے ۔ ہم اُن کے خلاف جنگ نہیں کررہے ہیں ۔ بلکہ اپنے ملک کے دفاع کیلئے جنگ کررہے ہیں ۔ پوری دنیا کو بچانے کیلئے لڑرہے ہیں ۔ حشد الشبابی سرکاری زیرسرپرستی ایک وفاقی تنظیم ہے جس میں کئی مسلح گروپس شامل ہیں ۔ یہ تنظیم دولت اسلامیہ کے خلاف جنگ کیلئے 2014ء میں تشکیل دی گئی تھی ۔ نوری نے کہا کہ دولت اسلامیہ کو اسلام سے کوئی تعلق نہیں ہے ۔ یہ تنظیم صرف اس علاقہ پر قبضہ کرناچاہتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ان کا اسلام پر ایمان نہیں ہے وہ موقع پرست ہیں اور صرف اپنے مفادات کی فکر کرتے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT