Tuesday , August 22 2017
Home / سیاسیات / دولت بٹورنے حکومت پر شرد یادو کا الزام مضحکہ خیز

دولت بٹورنے حکومت پر شرد یادو کا الزام مضحکہ خیز

صرف صنعتکاروں نے ہی پرسکون پارلیمانی کارروائی چلانے کی اپیل نہیں کی: وینکیا نائیڈو

نئی دہلی ۔ 12 اگست (سیاست ڈاٹ کام) جے ڈی (یو) لیڈر شرد یادو پر حکومت نے آج سخت تنقید کرتے ہوئے ان کے اس دعویٰ کو ’’پیام رساں کو ہی گولی مار دینے کا ایک عجیب واقعہ‘‘ قرار دیا۔ شرد یادو نے دعویٰ کیا تھا کہ پارلیمنٹ کو مؤثرانداز میں کام کرنے دینے کیلئے چند صنعتی گھرانوں کی کوشش نے ان (شرد یادو) کے اس الزام کی توثیق ہوگئی ہے کہ حکمراں محاذ دولت بٹورنے کے پیچھے دوڑ رہے ہیں۔ مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو نے پارلیمنٹ کے باہر سے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ’’مجھے یادو کے بیان پر حیرت ہوئی ہے یہ پیام رساں کو ہی گولی مار دینے کے ایک عجیب واقعہ کے مترادف ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ ’’18000 سے زائد افراد نے آن لائن نمائندگی کی تھی۔ انہوں (شرد یادو) نے کہا ہیکہ یہ تمام بڑے لوگ اور صنعتکار ہیں۔ کیا یہ سب صنعتکار ہیں؟ مؤثر پارلیمانی کارروائی چلانے کی درخواست کرنے والوں میں سنجے بارو، پروفیسر پیوش کمار سنہا (آئی آئی ایم ۔ احمدآباد) اور ڈاکٹر نریش تریبھاں بھی شامل ہیں‘‘۔ وینکیا نائیڈو نے استفسار کیا کہ ’’آیا نریش تریھان صنعتکار ہیں؟۔

 

سنجے بارو سابق وزیراعظم کے مشیر تھے۔ یہ ہندوستانی عوام کی خواہش ہے۔ آپ انہیں مبارکباد دینا چاہئے۔ عوام چاہتے ہیں کہ پارلیمنٹ اپنی کارروائی چلائے‘‘۔ اپوزیشن اور حکمراں پنچوں کے درمیان اس وقت تلخ الفاظ کا تبادلہ عمل میں آیا جب شرد یادو نے کہا کہ پارلیمنٹ پر سرمایہ داروں کی یلغار سے ان کا یہ الزام سچ ثابت ہوگیا ہے کہ بی جے پی حکومت ’’نوٹوں کے تھیلوں‘‘ کے پیچھے دوڑ رہی ہے۔ جے ڈی (یو) لیڈر دراصل کئی صنعتکاروں کے بشمول ان 15000 افراد کی آن لائن دستخطی مہم کا حوالہ دے رہے تھے جنہوں نے قانون سازوں سے درخواست کی تھی کہ پارلیمنٹ کو کام، بحث اور قانون سازی کرنے کا موقع دیا جائے۔ وینکیا نائیڈو نے ادعا کیا کہ عوام چاہتے ہیں کہ جی ایس ٹی بل منظور کیا جائے۔ معیشت اور معیار زندگی کو بہتر بنایا جائے۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ جیسے ہی جی ایس ٹی بل منظور ہوجائے گا ملک میں ترقی کی مجموعی پیداوار میں 1.5 تا 2 فیصد اضافہ ہوگا۔ شرد یادو کے بیان پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جے ڈی (یو) کے سربراہ ہمیشہ کانگریس کے خلاف لڑتے رہتے ہیں لیکن اب بڑے آرام و اطمینان سے اس پارٹی کے ساتھ ہوگئے ہیں۔ وینکیا نائیڈو نے کہا کہ ’’دنیا بہت تبدیل ہوچکی ہے شرد جی۔ اب سرمایہ دار کے کوئی معنی باقی نہیں رہے ہیں‘‘۔

TOPPOPULARRECENT