Monday , August 21 2017
Home / شہر کی خبریں / دو روزہ آٹھویں ہند ۔ گلوبل تعلیمی کانفرنس کا شہر میں انعقاد

دو روزہ آٹھویں ہند ۔ گلوبل تعلیمی کانفرنس کا شہر میں انعقاد

15 اور 16 نومبر کو ہندوستانی جامعات کو بیرونی جامعات کے نمائندوں سے تبادلہ خیال کا موقع
حیدرآباد ۔ 27 ۔ اکٹوبر : ( پی ٹی آئی ) : آٹھویں ہند ۔ گلوبل تعلیمی چوٹی کانفرنس کا حیدرآباد میں 15 اور 16 نومبر کو انعقاد عمل میں آئے گا ۔ فیڈریشن آف تلنگانہ اینڈ آندھرا پردیش چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری اور انڈس فاونڈیشن نے آج بتایا کہ اس تعلیمی چوٹی کانفرنس میں ہندوستان کی جامعات کے علاوہ بیرونی ممالک کی تقریبا 35 یونیورسٹیز حصہ لیں گی ۔ اس کانفرنس میں ہندوستانی یونیورسٹیز اور بیرونی یونیورسٹیز کے مابین اشتراک کے مواقع اور امکانات کا جائزہ لیا جائے گا ۔ یہ کانفرنس خاص طور پر شعبہ تعلیم کے تاجروں ، وائس چانسلروں ، ڈینس ، فیکلٹی ، داخلہ عہدیداروں اور ان کے ساتھیوں کے لیے بطور خاص منعقد کی جارہی ہے ۔ چوٹی کانفرنس میں اشتراکی ریسرچ پروگراموں ، مشترکہ ، دوہرے ڈگری پروگرامس ، ٹرانسفر پروگرامس ، فاصلاتی تعلیم اور ووکیشنل تعلیم کے پروگرامس پر سیشن منعقد ہوں گے ۔ دوران کانفرنس دوسری تعلیمی شراکت والوں پر بھی غور وخوض کیا جائے گا ۔ صدر نشین انڈس فاونڈیشن سی ڈی آریا نے آج میڈیا کے نمائندوں کو یہ بات بتائی ۔ انہوں نے بتایا کہ کانفرنس میں خاص طور پر انجینئرنگ ، اپلائیڈ سائنس ، انفارمیشن ٹکنالوجی ، بزنس اینڈ مینجمنٹ ، کلینیکل و طبی سائنس ، لائف سائنس ، ماحولیات و قدرتی وسائل ، تعلیم و ٹیچر ٹریننگ ، آرٹس و انسانی علوم اور سماجی سائنس کے شعبوں پر خاص توجہ دی جائے گی ۔ انہوں نے بتایا کہ ہندوستانی تعلیمی اداروں اور تنظیموں کے نمائندوں کی بیرونی یونیورسٹیز کے نمائندوں سے دوبدو ملاقاتیں ہوں گی اور مختلف امور پر تبادلہ خیال بھی کیا جائے گا ۔ ان ملاقاتوں میں تعلیم کے شعبہ میں اشتراک پر خاص توجہ دی جائے گی ۔ انہوں نے بتایا کہ حالیہ رجحانات سے پتہ چلا ہے کہ امریکہ اور دوسرے ممالک معاشی شعبہ میں تیزی سے ترقی کرنے والے ملک ہندوستان سے روابط کو مستحکم بنانا چاہتے ہیں ۔ یہ ممالک چاہتے ہیں کہ ہندوستان کے ساتھ نہ صرف اہم صنعتی شعبہ میں بلکہ ابھرتی ہوئی سائنس کے شعبہ میں بھی تعلقات مستحکم ہوں ۔ اس سلسلہ میں اعلیٰ تعلیم کے ادارے اہم رول ادا کرسکتے ہیں ۔ اس سے اشتراکی ریسرچ کو فروغ مل سکتا ہے ۔ ہندوستان کے ریسرچ پروگراموں کو بیرونی جامعات کے دوروں سے اپنے کام میں مزید بہتری اور نکھار لانے میں بھی مدد مل سکتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT