Tuesday , October 17 2017
Home / ہندوستان / دو مشتبہ آئی ایس افراد کی کوچی منتقلی

دو مشتبہ آئی ایس افراد کی کوچی منتقلی

مہاراشٹرا میں مزید ایک گرفتار، دھماکو مادہ ضبط
کوچی۔24 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) آئی ایس آئی ایس میں نوجوانوں کی بھرتی کے سلسلہ میں گرفتار دو افراد کو آج کیرالا منتقل کیا گیا تاکہ نوجوانوں کو دہشت گرد سرگرمیوں کے لئے اکسانے کے واقعات کی تحقیقات کی جاسکے۔ ارشد قریشی اور رضوان خان کو کیرالا پولیس نے گزشتہ ہفتہ دو علیحدہ کارروائیوں میں مہاراشٹرا پولیس کی مدد سے گرفتار کیا تھا۔ بعدازاں انہیں پوچھ تاچھ کے لئے نامعلوم مقام لے جایا گیا تھا۔ کیرالا میں پولیس ان نوجوانوں کے لاپتہ ہونے کی تحقیقات کررہی ہے جو مبینہ طور پر آئی ایس میں شامل ہوئے ہیں۔ قریشی کا تعلق مبینہ طور پر مبلغ اسلام ذاکر نائک کے اسلامک ریسرچ فائونڈیشن سے ہے اور انہیں 21 جولائی کو گرفتار کیا گیا تھا۔ ان دونوں کو مقامی عدالت میں پیش کیا گیا جس نے 25 جولائی تک انہیں ٹرانزٹ ریمانڈ میں دے دیا۔ کیرالا پولیس نے ایک خاتون کے بھائی کی کوچی میں درج کرائی گئی شکایت کے بعد ممبئی پہنچ کر یہ کارروائی کی جس میں ایک شخص نے کہا تھا کہ اس کی بہن اپنے شوہر کے ساتھ مشتبہ طور پر آئی ایس میں شامل ہوگئی ہے۔ مریم کے بھائی 25 سالہ ایبن جاکب نے پولیس کو بتایا کہ انہیں زبردستی اسلام قبول کرنے اور آئی ایس میں شامل ہونے کے لئے مجبور کیا گیا ہے۔ اس کے لئے اس کی بہن کے شوہر بیسٹن وینسنٹ عرف یحییٰ اور قریشی ذمہ دار ہیں۔ واضح رہے کہ کیرالا کے تقریباً 25 نوجوان لاپتہ ہیں جن کے بارے میں شبہ ہے کہ وہ آئی ایس میں شامل ہوگئے ہیں۔ اس دوران مہاراشٹرا اے ٹی ایس نے ضلع پربھنی میں ایک 24سالہ نوجوان کو مشتبہ آئی ایس سے روابط کی بنیاد پر گرفتار کیا ہے۔ اے ٹی ایس کے سینئر عہدیدار نے بتایا کہ آج صبح یہ گرفتاری عمل میں آئی اور اس کے پاس سے ایک کیلو دھماکو مادہ اور دیگر اعلات برآمد کئے گئے۔ بتایا جاتا ہے کہ خان کے پاس سے برآمد کئے گئے یہ دھماکو مادے کم شدت کے ہیں اور یہ بھی پتہ چلا کہ آئی اے ڈی کے لئے وہ کار کی ریموٹ کنجی استعمال کررہا تھا۔

TOPPOPULARRECENT