Monday , August 21 2017
Home / کھیل کی خبریں / دھرمشالہ میں پہلا ٹسٹ ‘ٹھاکر کی شرکت توجہ کا مرکز

دھرمشالہ میں پہلا ٹسٹ ‘ٹھاکر کی شرکت توجہ کا مرکز

دھرم شالہ ۔22  مارچ (سیاست ڈاٹ کام ) بی سی سی آئی کے سابق صدر انوراگ ٹھاکر کے آبائی شہر میں پہلی مرتبہ ٹسٹ میچ کا انعقاد کیا جارہا ہے  جہاں ہندوستان اور آسٹریلیا کے درمیان گواسکر۔ بارڈر ٹرافی کا فیصلہ ہوگا اور دونوں ٹیموں کے درمیان یہ مقابلہ ہفتہ کو شروع ہوگا۔ رانچی میں تیسرا ٹسٹ ڈرا ہونے کے بعد اب چوتھا اور آخری ٹسٹ دھرم شالہ میں25 مارچ سے کھیلا جائے گا۔اس سیریز کے چار ٹسٹ میچوں میں سے تین ٹسٹ ایسے مقامات پر منعقد کئے گئے جنہیں پہلی مرتبہ ٹسٹ کا درجہ ملا۔ پہلا ٹسٹ پونے میں اور تیسرا ٹسٹ رانچی میں ہوا اور ان دونوں مقامات پر پہلی مرتبہ ٹسٹ میچ کا انعقاد ہوا اور اب اس ترتیب میں دھرم شالہ کا نام جڑنے جا رہا ہے ۔دھرم شالہ کو نو نومبر 2015 کو ٹسٹ کا درجہ دیا گیا تھا اور اس وقت ٹھاکر بی سی سی آئی کے سیکرٹری تھے ۔ اب جبکہ اس خوبصورت میدان میں پہلے ٹسٹ میچ کا انعقاد ہو رہا ہے تو ٹھاکر کے ہاتھوں سے بی سی سی آئی کا اقتدار جا چکا ہے ۔ ٹھاکر کو لودھا پینل کی سفارشات کو نافذ نہ کرنے پر سپریم کورٹ نے صدر کے عہدے سے برخاست کر دیا ہے۔ہندوستان اور آسٹریلیا چار میچوں کی سیریز میں 1-1 کی برابری پر ہیں اور چوتھا میچ فیصلہ کن ہوگا۔ہماچل پردیش کرکٹ اسوسی ایشن کے اس میدان پر اب تک تین ونڈے اور آٹھ ٹوئنٹی 20 بین الاقوامی میچوں کا انعقاد ہوا ہے ۔ ان میں سے سات ٹوئنٹی 20 میچ تو گزشتہ سال ہوئے ٹوئنٹی20 ورلڈ کپ کے ہی تھے ۔ ہندوستان نے تین ونڈے میں ویسٹ انڈیز اور نیوزی لینڈ کے خلاف بالترتیب 2014  اور2016  میں کامیابی حاصل کی تھی جبکہ 2013  میں اسے انگلینڈ کے خلاف شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔جہاں تک ٹوئنٹی 20 میچوں کی بات ہے تو ہندوستان نے اس میدان پر ایک ٹوئنٹی 20 میچ دو اکتوبر 2015 کو جنوبی افریقہ کے خلاف کھیلا تھا جس میں مہمان ٹیم نے سات وکٹوں سے کامیابی حاصل کی تھی۔ دھرم شالہ میں اب ہندوستان اور آسٹریلیا کے درمیان فیصلہ کن میچ ہوگا ۔آسٹریلیا پونے اور ہندوستان بنگلور میں ٹسٹ جیت چکا ہے جبکہ رانچی کا مقابلہ ڈرا رہا تھا۔ اگر ہندوستان اس ٹسٹ کو جیت جائے تو گواسکر ۔ بارڈر ٹرافی اس کے قبضے میں آ جائے گی لیکن اگر آسٹریلیا اس میچ میں جیت حاصل کرتا ہے یا ڈرا کرا لیتا ہے تو گواسکر۔بارڈر ٹرافی اس کے قبضے میں برقرار رہے گی۔یہ دیکھنا کافی دلچسپ رہے گا کہ بی سی سی آئی سے برخاست کئے گئے ٹھاکر اپنے میدان میں اس میچ کو دیکھنے کے لئے پہنچتے ہیں یا نہیں۔ ٹھاکر بی جے پی رکن پارلیمنٹ ہیں اور ہماچل پردیش اولمپک اسوسی ایشن کے صدر بھی ہیں۔ ٹھاکر کو کرکٹ سرگرمیوں سے دور تو کر دیا گیا ہے اور وہ ایچ پی سی اے کے عہدیدار کی حیثیت سے اس میچ کو نہیں دیکھ سکتے ہیں لیکن ایک رہنما یا ریاست اولمپک اسوسی ایشن کے صدر کے طور پر میچ دیکھنے آ سکتے ہیں۔اگر ٹھاکر اس میچ میں پہنچتے ہیں تو جو ردعمل رہے گا یہ ایک دلچسپ معاملہ ہو گا۔

TOPPOPULARRECENT