Monday , October 23 2017
Home / کھیل کی خبریں / دھونی کے سوپرجائنٹس کو آج سے ہر میچ جیتنا ضروری

دھونی کے سوپرجائنٹس کو آج سے ہر میچ جیتنا ضروری

وارنر زیرقیادت حیدرآباد سن رائزرس کو دوبارہ ٹاپ پوزیشن کے حصول کا موقع ۔ پونے کے قطعی XI میں عرفان پٹھان کی متواتر غیرموجودگی ناقابل فہم
وشاکھاپٹنم ، 9 مئی (سیاست ڈاٹ کام) پریشانیوں سے دوچار رائزنگ پونے سوپر جائنٹس کیلئے بقاء کی لڑائی رہے گی جب وہ خطاب کے طاقتور دعوے دار سن رائزرس حیدرآباد کے خلاف انڈین پریمیر لیگ میں کل یہاں مقابلہ کریں گے۔ 10 میچوں میں محض تین کامیابیوں کے ساتھ پونے کی پوائنٹس ٹیبل میں کمتر چھٹی پوزیشن ہے، جبکہ حیدرآباد اس ایڈیشن میں غالب ٹیم رہی ہے جو چھ کامیابیوں اور تین شکستوں کے ساتھ دوسرے مقام پر ہے۔ مہندر سنگھ دھونی اور اُن کے کھلاڑیوں کیلئے ابھی تک حوصلہ شکن سفر ثابت ہوا ہے کیونکہ ممبئی انڈینس، سن رائزرس حیدرآباد اور دہلی ڈیرڈیولز کے خلاف تین کامیابیوں سے ہٹ کر وہ دیگر موقعوں پر ناکام ہوئے ، اور خود پونے میں اپنے ہوم گراؤنڈ پر چار میچز ہار دیئے۔ دھونی کی ٹیم سلسلہ وار انجریز کے سبب بھی کمزور ہوئی، جیسا کہ فاف ڈوپلیسی، کیون پیٹرسن، اسٹیون اسمتھ اور مچل مارش وطن واپس ہوچکے ہیں۔ اگرچہ پاکستانی نژاد آسٹریلیائی بیٹسمن عثمان خواجہ اور سابق آسٹریلیائی کیپٹن جارج بیلی ٹیم میں شامل ہوگئے، لیکن وہ ابھی تک کچھ خاص فرق پیدا نہیں کرپائے اور سنجیو گوئنکا کی ملکیت والی ٹیم کو بہرکیف کچھ کرنا پڑے گا کہ خود کو مسابقت میں برقرار رکھا جاسکے۔ دھونی اور ٹیم مینجمنٹ کی طرف سے ایک اور غلطی بار بار دہرائی جارہی ہے جو تجربہ کار آل راؤنڈر عرفان پٹھان کو قطعی XI سے مسلسل باہر رکھنا ہے۔ آئی پی ایل میں ہر میچ کم از کم 7 ہندوستانی کھیل سکتے ہیں مگر عرفان نے پونے کے 10 میچز میں صرف ایک مرتبہ کھیلا ہے، جس کا کوئی معقول جواز نظر نہیں آتا ہے۔ سوپرجائنٹس پر ایسے معیاری بولروں کے فقدان کا اثر بھی پڑا ہے، جو حریفوں کو قابو میں رکھ سکیں۔ اُن کا کوئی بھی بولر جاریہ سیزن وکٹیں لینے والے ٹاپ 15 بولروں میں شامل نہیں ہے۔ بیٹسمنوں میں ذمے داری اجنکیا رہانے پر ڈال دی گئی کہ رنز بناتے رہیں ۔ وہ اب تک 417 رنز جوڑ چکے ہیں اور سب سے زیادہ اسکور کرنے والوں کی فہرست میں تیسری پوزیشن پر ہیں۔ اب جبکہ مسابقتی دوڑ میں برقرار رہنے کیلئے سوپرجائنٹس کو ہر میچ جیتنا ہے، دھونی اور اُن کے کھلاڑیوں کو اچھی طرح معلوم ہے کہ اب کوئی بھی لغزش ہوجائے تو انھیں اس ٹورنمنٹ کو خیرباد کہنا پڑے گا۔ دوسری طرف حیدرآباد کامیابی کی لہر پر گامزن ہے جبکہ اُن کی تازہ جیت دو مرتبہ کے ونر اور ڈیفنڈنگ چمپینس ممبئی انڈینس کے خلاف 85 رنز کی فتح کے طور پر گزشتہ شب یہاں اے سی اے۔ وی ڈی سی اے اسٹیڈیم میں درج ہوئی۔ سن رائزرس کو کپتان ڈیوڈ وارنر کی بیٹنگ طاقت سے تحریک مل رہی ہے، جو ابھی تک پانچ ففٹیوں کے ساتھ 458 رنز بناتے ہوئے ٹاپ اسکوررز کی فہرست میں دوسرے مقام پر ہیں۔ شکھر دھون نے بھی ذمے داری نبھائی اور اوپننگ پوزیشن میں اپنے کپتان کا ساتھ دیا ہے۔ آسٹریلیائی آل راؤنڈر موئزس ہنریکس بھی چند کلیدی مظاہروں کے ساتھ سن رائزرس کا اہم حصہ ثابت ہوئے ہیں۔ یوراج سنگھ بھی ٹخنے کی انجری سے بحالی کے بعد ٹیم میں واپس ہوکر بتدریج ردھم حاصل کررہے ہیں۔ حیدرآباد کی بولنگ یونٹ نے بھی اچھی کارکردگی پیش کی جیسا کہ آشیش نہرا، بھونیشور کمار، بنگلہ دیش کے مستفیض الرحمن اور بریندر سرن ٹیم کیلئے عمدہ مظاہرے پیش کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT