Monday , August 21 2017
Home / ہندوستان / دہشت گردوں کی سرکاری سرپرستی روکنے پر زور

دہشت گردوں کی سرکاری سرپرستی روکنے پر زور

ایک ملک کا دہشت گرد دوسرے ملک میں شہید نہیں کہلایا جاسکتا ، بالی میں کرن رجیجو کا خطاب
نئی دہلی ۔ 10 اگست (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی وزیر کرن رجیجو نے آج کہا کہ ممبئی اور پٹھان کوٹ جیسے دہشت گرد حملوں کے متاثرین کو انصاف صرف اسی صورت میں مل سکتا ہے جب بعض ممالک دہشت گردی اور ہر قسم کی انتہاء پسند کارروائیوں کو روک دیں۔ کرن رجیجو نے انڈونیشیاء کے جزیرہ بالی میں انسداد دہشت گردی کے موضوع پر ایک بین الاقوامی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ دہشت گردی کی کوئی تاریخ و ستائش نہ کی جائے اور نہ ہی کوئی ملک اس کی سرپرستی کرے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ’’کسی ایک ملک کا دہشت گرد کسی کے لئے بھی مجاہد آزادی یا شہید نہیں ہوسکتا۔ ایک دہشت گرد ہر جگہ دہشت گرد ہی کہلایا جاتا۔ کسی بھی قسم کی دہشت گرد کارروائی کی کسی بھی بنیاد پر کوئی تائید نہیں کی جاسکتی

اور نہ ہی اس کو حق بجانب قرار دیا جاسکتا ہے جس کے بعد ہی ممبئی اور پٹھان کوٹ جیسے دہشت گرد حملوں کے متاثرین کو انصاف رسانی ممکن ہوگی‘‘۔ رجیجو نے کہا کہ دہشت گردی دراصل نہ صرف مہذب معاشروں کے بنیادی نظریہ پر ایک حملہ ہے بلکہ بذات خود ساری انسانیت پر حملہ کے مترادف ہے۔ دہشت گردی تمام بین الاقوامی سرحدوں کو عبور کررہی ہے اور شاید ہی کوئی اس کے اثرات سے محفوظ ہے۔ مرکزی وزیر نے کہا کہ دہشت گرد گروپس بڑے پیمانے پر قتل و غارت گری کے ذریعہ انسانی جانوں کو زیادہ سے زیادہ نقصان پہنچانے کے درپے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان ہر قسم کی دہشت گردی کی سرکوبی کے عہد کا پابند ہے اور وہ تمام سازشی سرغنوں کو انصاف کے کٹہرے میں لانا چاہتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT