Monday , August 21 2017
Home / Top Stories / دہشت گردی ‘ دنیا کو درپیش سنگین خطرہ : نریندر مودی

دہشت گردی ‘ دنیا کو درپیش سنگین خطرہ : نریندر مودی

موزمبیق کے ساتھ دفاعی و سکیوریٹی تعاون میں اضافہ ۔ صدر نیوسی کے ساتھ پریس کانفرنس
ماپوٹو ( موزمبیق ) 8 جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) مختلف ممالک میں دہشت گردانہ حملوں میں اضافہ کے دوران وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ دہشت گردی دنیا کیلئے سب سے سنگین خطرہ ہے ۔ اس سے ہندوستان اور موزمبیق بھی برابر کے متاثر ہیں ۔ دونوں ملکوں نے سکیوریٹی اور دفاعی تعلقات کو مستحکم کرنے اور غذائی سکیوریٹی میں تعاون میں اضافہ سے بھی اتفاق کرلیا ہے ۔ نریندر مودی کی موزمبیوق کے صدر فلپ نیوسی کے ساتھ یہاں بات چیت کے بعد دونوں ملکوں نے تین معاہدات پر دستخط کئے جن میں ایک طویل مدتی معاہدہ بھی ہے جس کے تحت ہندوستان اس افریقی ملک سے دالوں کی خریدی کریگا تاکہ اپنی ضروریات کی تکمیل ہوسکے اور قیمتوں پر قابو پایا جاسکے ۔ ہندوستان کو موزمبیق کا قابل اعتبار دوست اور بھروسہ مند شریک قرار دیتے ہوئے وزیر اعظم نے یہ بھی اعلان کیا کہ ہندوستان ضروری ادویات بشمول ایڈز کا علاج کرنے والی ادویات بھی اس ملک کو فراہم کی جائیں گی ۔ یہ فراہمی موزمبیق کے عوامی نظام صحت کو مستحکم کرنے کی کوشش کا حصہ ہے ۔ انہوں نے زراعت ‘ نگہداشت صحت ‘ توانائی سلامتی ‘ سکیوریٹی ‘ دفاع اور مہارتوں کے فروغ جیسے شعبہ جات میں دونوں ملکوں کے مابین تعاون کی نشاندہی کی ۔

وزیر اعظم نے نیوسی کے ساتھ بات چیت کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس سے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ ہماری ترقی اور معاشی تعلقات سے دونوں سماجوں کو فائدہ ہو۔ ہم چاہتے ہیں کہ شراکت اور رفاقت سے عوام کی سلامتی اور سکیوریٹی بھی یقینی بنے ۔ دونوں نے باہمی بات چیت میں تجارت اور سرمایہ کاری کے شعبہ جات میں تعاون میں اضافہ کے امکانات پر تبادلہ خیال کیا ۔ وزیر اعظم نے کہا کہ صدر نیوسی اور انہوں نے دہشت گردی کو دنیا کیلئے سب سے سنگین خطرہ قرار دیا ہے ۔ موزمبیق اور ہندوستان اس سے بچے ہوئے نہیں ہیں ۔ دہشت گردی سے یہ دونوں ممالک برابر کے متاثر اور شکار ہیں۔ ان کے ریمارکس کو اسلئے بھی اہمیت حاصل ہوگئی ہے کیونکہ یہ ریمارکس ایسے وقت میں کئے گئے ہیں جب مختلف ممالک میں دہشت گردانہ حملے ہو رہے ہیں۔ واضح رہے کہ ہندوستان کے پڑوسی ملک بنگلہ دیش میں ایک ہفتے کے اندر دوسرا بڑا دہشت گرد حملہ ہوا ہے ۔ دہشت گردوں نے چار دن قبل سعودی عرب کے مقدس شہر مدینہ طیبہ میں مسجد نبوی ؐ کے قریب بھی کارروائی کی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT