Friday , September 22 2017
Home / ہندوستان / دہشت گردی سے متاثرہ 10 ملکوںمیں ہندوستان بھی شامل : رپورٹ

دہشت گردی سے متاثرہ 10 ملکوںمیں ہندوستان بھی شامل : رپورٹ

آئی ایس آئی ایس اور بوکوحرم ساری دنیا میں دہشت گرد حملوں کیلئے سب سے زیادہ مشترکہ طور پر ذمہ دار
نئی دہلی 19 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) دہشت گردی سے متاثرہ دنیا کے 10 ملکوں میں ہندوستان بھی شامل ہے۔ سال 2014 ء میں دہشت گردی کے واقعات سے ہندوستان کو نقصان پہونچا ہے۔ ایک نئی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ساری دنیا میں دہشت گرد حملوں کی وجہ سے نصف دنیا بُری طرح متاثر رہی ہے۔ آئی ایس آئی ایس اور بوکوحرم اب مشترکہ طور پر ان دہشت گرد حملوں کے لئے ذمہ دار ہیں۔ گلوبل ٹرارزم انڈیکس 2015 (GTI) کے تیسرے ایڈیشن کے مطابق ہندوستان کا رینک چھٹواں ہے۔ 162 اقوام کے منجملہ ہندوستان میں 2014 ء میں دہشت گردی کے واقعات ہوئے ہیں۔ ہندوستان میں دہشت گردی سے مربوط واقعات میں اضافہ کے ساتھ اس میں مرنے والوں کی تعداد 1.2 فیصد اضافہ ہوا اور ان اموات کی تعداد 416 تک پہونچی ہے جو 2010 ء سے ہونے والے دہشت گردی کے واقعات اور اموات میں سب سے زیادہ تعداد ہے۔ ایسے 763 دہشت گرد واقعات ہوئے ان میں 2013 ء سے اب تک 20 فیصد کا اضافہ ہوا۔ امریکہ کی اس تنظیم نے بتایا کہ ہندوستان میں دو خطرناک اسلامی دہشت گرد گروپس لشکر طیبہ اور حزب المجاہدین نے 2014 ء میں کئی حملے کئے تھے۔ سال 2014 ء میں 24 اموات کے لئے پاکستان کی لشکر طیبہ ہی ذمہ دار تھی۔ 2013 ء میں 30 اموات اسی تنظیم کے حملے میں ہوئے تھے۔ 2013 ء میں حزب المجاہدین واحد گروپ تھا جو ہندوستان میں سرگرم تھا۔ اس نے خودکش حملے کرنے کا حربہ اختیار کیا لیکن 2014 ء میں ہندوستان کے اندر کوئی خودکش حملہ نہیں ہوا۔ ساری دنیا میں 2014 ء کے دوران ہونے والے دہشت گرد واقعات میں اموات کی تعداد میں 80 فیصد اضافہ ہوا اور اب یہ تعداد سال 2013 ء کی اموات 18,111 کے مقابل سال 2014 ء تک 32,658 ہوگئی ہے۔

دہشت گردی سے متاثرہ ملکوں میں پاکستان کا مقام چوتھا جبکہ امریکہ کو 35 واں مقام ملا ہے جو دہشت گردی سے زیادہ متاثر ملکوں میں سے ایک ہے۔ رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ صرف دو دہشت گرد گروپس آئی ایس آئی ایس اور بوکوحرم اب مشترکہ طور پر ساری دنیا کے نصف حصہ میں دہشت گرد کارروائیاں انجام دینے کے لئے ذمہ دار ہیں۔ ان دونوں کی کارروائیوں میں 51 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔ بوکوکحرم نے مغربی افریقہ میں آئی ایس آئی ایس کے ساتھ اپنے اتحاد کا اعلان کرتے ہوئے مارچ 2015 ء کو دنیا کی سب سے خطرناک خون ریزی کرنے والا گروپ بن گیا۔ ہندوستان کی دہشت گردی سے متاثرہ 10 ملکوں میں اس لئے شمار کیا گیا کیوں کہ سال 2000 ء سے 2014 ء تک یہاں کئی واقعات رونما ہوئے تھے۔ سال 2000 ء کے بعد سے سال 2014 ء سے پہلے پہلی مرتبہ ہندوستان کو ان 10 ملکوں میں شمار نہیں کیا جاتا تھا جو دہشت گردی سے متاثر تھے۔ اس لئے اب ساری دنیا میں دہشت گردی کے واقعات میں اضافہ ہورہا ہے مگر ہندوستان نے اندر بہتری آرہی ہے۔ ہندوستان میں ہونے والے دہشت گرد حملوں میں اموات کی تعداد کم ہے۔ سال 2014 ء میں ہندوستان کے اندر 70 فیصد حملے کئے گئے جو غیر مہلک تھے اور 50 مختلف دہشت گرد گروپ اس میں شامل تھے۔ اس رپورٹ میں ہندوستان کے اندر ہونے والے تشدد کے واقعات کی 3 حصوں میں زمرہ بندی کی گئی ہے۔ ان میں کمیونسٹوں، اسلام پسندوں اور علیحدگی پسندوں کی سرگرمیاں شامل ہیں۔ ماؤسٹوں کے دو خطرناک گروپس نے سارے ملک میں کئے جانے والے حملوں کی ذمہ داری قبول کی تھی۔ ماؤسٹوں کی جانب سے اغواء کے واقعات بھی ایک عام بات بن گئے ہیں۔ ماؤسٹ قیدیوں کو رہا کرانے کے لئے حکومت پر دباؤ ڈالتے ہوئے سیاستدانوں کا اغواء کرلیا جاتا تھا۔ ماؤسٹوں کے حملہ سب سے زیادہ بہار، چھتیس گڑھ اور جھارکھنڈ میں ہوئے ہیں۔ جموں و کشمیر پر پاکستان کے ساتھ تنازعہ کی وجہ سے یہاں اسلامی دہشت گردی ہی ایک اہم ذریعہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT