Saturday , September 23 2017
Home / ہندوستان / دہشت گردی کی اصل جڑ کو کاٹنا مغرب کی ذمہ داری

دہشت گردی کی اصل جڑ کو کاٹنا مغرب کی ذمہ داری

عمل اور ردعمل کا تسلسل جاری رہنا مناسب نہیں : اعظم خاں
علیگڑھ 19 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) پیرس پر حملوں کے پس منظر میں اترپردیش کے وزیر اوقاف اعظم خاں نے آج مغربی ملکوں سے کہاکہ وہ دہشت گردی کی اصل جڑ کر کاٹ دیں اور اس کی وجوہات کا پتہ چلاکر اس کے سدباب کے لئے کام کریں۔ دہشت گردی کو ختم کرنے کے لئے ضروری ہے کہ اس کی بنیادی شکایت کا اندازہ کرلیا جائے جس کے بعد ہی اس جدوجہد میں کامیابی ملے گی۔ دنیا بھر میں دہشت گردی کے واقعات کے بعد بڑھتے ردعمل سے غیر مناسب حالات پیدا ہوئے ہیں۔ یہ دہشت گردی کے واقعات اصل میں ان لوگوں کا ردعمل ہیں جو بڑی طاقتوں کے ظلم و زیادتیوں کا شکار بنے ہیں۔ یہاں عمل اور ردعمل کے بڑھتے تسلسل سے سماجی تصادم کی نوبت آتی ہے۔ دنیا بھر میں دہشت گردی کے بڑھتے واقعات اس بات کا ثبوت ہیں کہ سماجی تصادم کو ہوا دی جارہی ہے۔ اعظم خاں نے امریکہ پر زور دیا کہ اسے دہشت گردی کی اصل وجوہات کا پتہ چلانے کی ضرورت ہے۔ دنیا میں دہشت گردی سے نمٹنے کے لئے بھی اسے دوسرے معیارات پر عمل نہیں کرنا چاہئے۔ اگر مغربی دنیا دہشت گردی کے خلاف اپنی جنگ میں کامیاب ہونا چاہتی ہے تو دوہرا پن ترک کرنا ہوگا۔ جب ہندوستان جیسے مشرقی ممالک دہشت گرد حملوں کا شکار ہوتے ہیں تو اس سے مغربی دنیا پر کوئی اثر نہیں ہوتا اور وہ ان حملوں کو اہمیت نہیں دیتی۔

TOPPOPULARRECENT