Tuesday , July 25 2017
Home / عرب دنیا / دہشت گردی کی تائید کیلئے سعودی الزام بے بنیاد : قطر

دہشت گردی کی تائید کیلئے سعودی الزام بے بنیاد : قطر

دوحہ ۔9  جون (سیاست ڈاٹ کام) قطر نے سعودی عرب اور اس کے حلیفوں کی طرف سے جاری کردہ دہشت گردی کی ایک بلیک لسٹ کو غلط اور بے بنیاد قرار دیتے ہوئے آج مسترد کردیا، جس فہرست میں قطر کے بعض افراد اور اداروں کو اسلامی عسکریت پسند گروپوں سے مربوط کیا گیا ہے۔ سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، مصر اور بحرین کی طرف سے جاری کردہ ایک فہرست میں قطر کے 59 افراد اور اداروں کو دہشت گردی سے مربوط کیا گیا تھا اور اس فہرست کی اجرائی کے چند گھنٹوں بعد قطر نے اس پر شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے۔ حکومت قطر کی طرف سے جاری کردہ ایک صحافتی بیان میں کہا گیا ہیکہ ’’دہشت گردوں کو فنڈس کی فراہمی پر نگرانی سے متعلق سعودی عرب، بحرین، مصر اور متحدہ عرب امارات کی طرف سے جاری مشترکہ بیان سے پھر ایک مرتبہ بے بنیاد الزامات عائد کئے گئے ہیں۔ حقیقت میں ان الزامات کی کوئی اساس و بنیاد نہیں ہے‘‘۔ بیان میں واضح کیا گیا ہیکہ دہشت گرد گروپوں کی قطر ہرگز تائید نہیں کرتا۔ قطر کے بیان میںکہا گیا ہیکہ ’’دہشت گردی کے انسداد اور اس کے خلاف کارروائی کے مسئلہ پر ہمارا موقف اس مشترکہ بیان پر دستخط کرنے والے ممالک (سعودی عرب، بحرین، امارات، مصر وغیرہ) سے کہیں زیادہ مضبوط و مستحکم ہے اور مشترکہ بیان بنانے والوں نے اپنی سہولت و مصلحت کے تحت اس حقیقت کو نظرانداز کردیا ہے۔ سعودی قیادت میں جاری کردہ فہرست میں دوحہ میں واقع اخوان المسلمون کے روحانی پیشوا یوسف القرضاوی اور قطر کے چلائے جانے والے خیراتی اداروں کے نام بھی شامل ہیں۔ فہرست عرب اور اس کے ہمنوا ملکوں کی طرف سے جاری کردہ نام نہاد ’’بلیک لسٹ‘‘ اور اس کے خلاف قطر کے شدید ردعمل و جواب نے خلیج میں جاری سفارتی و سیاسی کشیدگی میں مزید اضافہ کردیا ہے۔ یہ کشیدگی اس وقت پیدا ہوئی تھی جب سعودی عرب اور اس کے ہمنواؤں نے قطر پر دہشت گردی کی تائید کا الزام عائد کرتے ہوئے اس کے ساتھ سفارتی تعلقات منقطع کرلئے تھے۔ قطر نے ان الزامات کو سختی کے ساتھ مسترد کردیا ہے اور اس کے وزیرخارجہ شیخ محمد عبدالرحمن الثانی نے گذشتہ روز کہا تھا کہ ان کا ملک دوسروں کی دھمکیوں پر غیرضروری دباؤ کے آگے خودسپرد یا مرعوب نہیں ہوگا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT