Tuesday , September 26 2017
Home / عرب دنیا / دہشت گردی کے خلاف سعودی عرب کی زیرقیادت نیا اتحاد

دہشت گردی کے خلاف سعودی عرب کی زیرقیادت نیا اتحاد

اتحادی گروپ میں 35 ممالک شامل، وزیردفاع سعودی عرب کا بیان
ریاض ۔ 11 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) دہشت گردی کے خلاف جنگ کرنے کیلئے سعودی عرب کی زیرقیادت ایک نیا اتحاد تشکیل پایا ہے۔ اسلامی ممالک میں بڑھتی دہشت گردی کو کچلنے کیلئے آئندہ ماہ سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض میں اس نئے اتحاد کی رکن ممالک کا اجلاس منعقد ہوگا۔ اس تعلق سے پہلی مرتبہ برسرعام اعلان کیا گیا ہے۔ سعودی ذرائع نے کہا کہ سعودی عرب کے نائب ولیعہد شہزادہ محمد بن سلمان نے جو وزیردفاع بھی ہیں، ڈسمبر میں اس نئے اتحاد کا اعلان کیا تھا۔ مغربی سفیر نے کہا کہ اس نئے گروپ کے تعلق سے تفصیلات ابھی واضح نہیں ہیں لیکن اس اتحاد کیلئے اس قسم کے انفراسٹرکچر کی ضرورت ہے وہ بھی غیرواضح ہے۔ اب سرکاری طور پر یہ اعلان کیا جارہا ہیکہ مارچ کے اختتام تک اتحادی گروپ کے ممالک کا اجلاس منعقد ہوگا۔ سعودی ذرائع نے اجلاس کی تاریخ نہیں بتائی۔ ذرائع نے مزید کہا کہ سعودی عرب کے اس نئے اتحاد میں پہلے 34 ممالک کا ذکر کیا گیا تھا لیکن اب اس کی تعداد 35 ہوگئی ہے۔ رکن ممالک کے ناموں کو سابق میں سعودی حکومت نے واضح کیا تھا اور اشارہ بھی دیا تھا کہ اس میں چھوٹے افریقی ممالک کے علاوہ بڑی علاقائی طاقتیں جیسے ترکی شامل ہیں۔ سعودی عرب نے کہا کہ اس اتحاد کے ذریعہ تمام ممالک انٹلیجنس معلومات فراہم کریں گے اور تشدد کے نتیجہ کو کچلنے کیلئے حکمت عملی اختیار کی جائے گی اس کیلئے ضروری فوج کی تعیناتی بھی عمل میں لائی جائے گی۔ پیر کے دن سعودی عرب کے وزیرخارجہ عادل الجبیر نے کہا کہ ان کا ملک شام میں فوج تعینات کرنے کیلئے تیار ہے۔ دہشت گردی کے خلاف عالمی سطح پر جاری کوششوں کے درمیان حکومت سعودی عرب نے بھی مسلم ممالک پر مشتمل گروپ تشکیل دینے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ مسلم ملکوں میں بڑھتی دہشت گردی کو کچلا جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT