Tuesday , August 22 2017
Home / Top Stories / دہشت گردی کے مجرم قیدیوں کی رہائی سے امریکیوں میں خوف

دہشت گردی کے مجرم قیدیوں کی رہائی سے امریکیوں میں خوف

واشنگٹن۔/5اگسٹ، ( سیاست ڈاٹ کام ) امریکی جیلوں میں قید دہشت گردی کے درجنوں مجرمین آئندہ چند برسوں میں رہا ہوجائیں گے جس سے یہ سوال اٹھنے لگا ہے کہ آیا اس سے امریکیوں کو خوفزدہ ہونا چاہیئے۔ لیکن اس سوال کا کوئی جواب ملنا آسان نہیں ہے۔ 9/11 دہشت گرد حملوں کے بعد امریکہ نے کئی حملوں کو ناکام بنانے کی جانفشانی سے محنت کی اور ایسے سینکڑوں افراد کو قید کردیا جو عسکریت پسند گروپوں میں شامل ہوئے تھے یا ان کی مدد کی تھی۔ لیکن ماہرین کا کہنا ہے کہ اس حقیقت پر بہت کم توجہ مرکوز کی گئی کہ اس وقت کیا ہوگا جب یہ مجرمین اپنی قید کی تکمیل کے بعد رہا ہوجائیں گے۔ محابس بیورو کے مطابق ان میں380 قیدی بین الاقوامی دہشت گردی سے تعلق رکھتے ہیں۔ دیگر 83 اندرون ملک دہشت گردی کے مجرم پائے گئے تھے۔ امریکی ایوان نمائندگان کانگریس کی ریسرچ سرویس کمیٹی کی رپورٹ میں کہا گیاہے کہ اندرون ملک پروان چڑھنے والے 50 پرتشدد جہادی جنوری 2017 سے 2026 کے درمیان رہا ہوں گے۔ ایف بی آئی کے سابق ڈائرکٹر جیمس کومی جنہیں صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے مئی میں برطرف کردیا تھا کانگریس سے کہا تھا کہ ملک کی تمام 50 ریاستوں میں اسلامک اسٹیٹ اور دیگر انتہاپسندی کی سرگرمیوں سے متعلق 900 واقعات کی سرگرم تحقیقات جاری ہیں۔ اکثر مجرمین قید ہیں چند کو عمر قید بھی دی گئی ہے جو زیادہ سے زیادہ 13سال قید کے بعد رہا ہوجائیں گے۔

ٹارچ ٹاور آتشزدگی کی تحقیقات جاری
دوبئی ۔ 5 اگسٹ ۔(سیاست ڈاٹ کام) دوبئی کے ہمہ منزلہ ٹارچ ٹاور میں کل رات پیش آئی آتشزدگی کی وجہ اب تک معلوم نہ ہوسکی ۔ دوبئی پولیس کے سربراہ نے کہا کہ ماہرین آگ لگنے کی وجہہ معلوم کررہے ہیں ۔ اس دوران حکمراں شیخ محمد بن راشد المکتوم نے ٹارچ ٹاور کے متاثرین کو بہترین ہوٹلس میں قیام کی سہولت فراہم کرنے کا اعلان کیا ۔

 

TOPPOPULARRECENT