Friday , June 23 2017
Home / Top Stories / دہلی اسمبلی میں ای وی ایم کی رگنگ کا مظاہرہ

دہلی اسمبلی میں ای وی ایم کی رگنگ کا مظاہرہ

ڈپلیکیٹ ہونے کا الیکشن کمیشن کا ادعا ، دھوکہ دہی : بی جے پی
نئی دہلی ۔ /9 مئی (سیاست ڈاٹ کام) برقی رائے دہی مشینیں ٹیمپرنگ سے محفوظ ہیں یا نہیں اس پر گرما گرم بحث کے دوران عام آدمی پارٹی نے دہلی اسمبلی میں راست مظاہرہ کرتے ہوئے بتایا کہ برقی رائے دہی مشینوں کو کس طرح ریگنگ کی جاتی ہے ۔ الیکشن کمیشن نے اس دعویٰ کو غلط قرار دیتے ہوئے کہا کہ دہلی اسمبلی میں نقلی مشین سے مظاہرہ کیا گیا ہے ۔ اس مسئلہ پر بحث میں شرکت کرتے ہوئے ایک دن طویل دہلی اسمبلی کے خصوصی اجلاس میں رکن اسمبلی سوربھ بھردواج نے ڈرامائی انداز میں دعویٰ کیا کہ رائے دہی مشین کا ایک خفیہ کوڈ فیڈ کرکے آسانی سے اس کا استحصال کیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ای وی ایم کا استحصال ایک سنگین مسئلہ ہے ۔ حالیہ عرصہ میں گوا ، پنجاب اور دہلی بلدی انتخابات میں برقی رائے دہی مشینوں کا استحصال کیا گیا تھا ۔ تاہم الیکشن کمیشن نے اس دعوی کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے کہا کہ ای وی ایم کی جگہ ڈپلیکٹ مشین استعمال کی گئی تھی ۔ بی جے پی نے اس مظاہرے کو ایک ڈراما قرار دیتے ہوئے کہا کہ عام آدمی پارٹی دھوکہ دہی میں ملوث ہے ۔ چیف منسٹر دہلی اروند کجریوال نے اپنے ٹوئٹر پر تحریر کیا تھا کہ سوروبھ بھردواج سچائی کو بے نقاب کریں گے ۔ ملک کے خلاف ایک بڑی سازش کی جارہی ہے ۔ بھردواج نے جو بریٹر کیلاش حلقہ کے نمائندہ ہے دعویٰ کیا کہ کوئی بھی انجنیئر کو اس علاقہ میں طوفیل مدت تک کام کرچکا ہو جانتا ہے کہ مشینوں سے چھیڑ چھاڑ کیسے کی جاسکتی ہے ۔ مشرا جنہیں پارٹی کی ابتدائی رکنیت سے کل مطل کیا گیا ہے ۔ پوری کارروائی کا مذاق اڑاتے ہوئے کہا کہ پارٹی کو منفی رجحان سے بعض آجانا چاہئیے ۔ حقیقت کو قبول کرلینا چاہئیے کہ عوام اب کجریوال کی تائید کرنے کیلئے تیار نہیں ہے ۔ کجریوال بار بار دعویٰ کرچکے ہیں کہ ان کی پارٹی کی انتخابی ناکامی ، برقی رائے دہی مشینوں کے استحصال کا نتیجہ ہے ۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ اگر انہیں کوئی برقی رائے دہی مشین دی جائے تو اسے صرف 90 سیکنڈ میں ہیک کرکے دکھا دیں گے ۔ ڈپٹی چیف منسٹر منیش سیسوڈیا نے کہا کہ عام آدمی پارٹی ای وی ایم ہیکاتھان میں شرکت کرے گی جس کا اہتمام جاریہ ماہ کے اواخر میں الیکشن کمیشن کی جانب سے کیا جارہا ہے اور یہ ثابت کرکے دکھائی گی کہ رائے دہی مشینوں کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کی جاسکتی ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT