Wednesday , August 23 2017
Home / Top Stories / دہلی بلدی انتخابات کے لیے آج رائے دہی

دہلی بلدی انتخابات کے لیے آج رائے دہی

نئی دہلی ۔ 22 ۔ اپریل : ( سیاست ڈاٹ کام ) : قومی دارالحکومت دہلی میں کل بلدی کونسلرس کا انتخاب عمل میں آرہا ہے اور یہاں سہ فریقی مقابلہ نہ صرف انتہائی سخت ہوگا بلکہ اس کے اثرات ملک کے دیگر حصوں پر بھی مرتب ہوسکتے ہیں ۔ عام آدمی پارٹی ، بی جے پی اور کانگریس نے بلدی انتخابات کے لیے زبردست مہم چلائی اور ملک کے دارالحکومت میں سیاسی حالات کی تبدیلی کا انحصار نتیجہ پر ہوگا ۔ یہ انتخابات اس بات کا فیصلہ کریں گے کہ عام آدمی پارٹی جس نے 2015 اسمبلی انتخابات میں تمام 67 نشستوں پر کامیابی حاصل کرتے ہوئے سب کو حیرت سے دوچار کردیا تھا ۔ کیا اب بھی اس کا اثر برقرار ہے یا نہیں ۔ اس طرح راجوری گارڈن اسمبلی حلقہ سے ضمنی انتخابات میں عام آدمی پارٹی کو شکست صرف ایک حلقہ تک محدود تھی ۔ بی جے پی کے لیے مخالف حکومت رجحان سے نمٹنا ایک چیلنج ہے ۔ اس کے علاوہ پارٹی کی کوشش یہ ہے کہ اروند کجریوال کسی بھی طرح وزیراعظم نریندر مودی کے کلیدی حریف بن کر نہ ابھریں ۔ کانگریس نے 2015 کے بعد ووٹ کے فیصد میں نمایاں اضافہ کیا ہے اور پارٹی کو توقع ہے کہ داخلی جھگڑوں کے باوجود وہ اس بار بہتر مظاہرہ کرے گی ۔ بی جے پی صدر امیت شاہ نے یوتھ سطح کے پارٹی کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پارٹی کے حق میں فیصلہ آئندہ اسمبلی انتخابات میں کامیابی کی پہلی سیڑھی ہوگا ۔ انتخابات میں الکٹرانک ووٹنگ مشین سے چھیڑ چھاڑ کا موضوع بھی چھایا رہا اور اروند کجریوال کے اس الزام کو الیکشن کمیشن نے مسترد کردیا ہے ۔ ریاستی الیکشن کمیشن نے کل 272 وارڈس میں پھیلے 13 ہزار سے زائد بوتھس پر انتظامات پورے کرلیے ہیں ۔ 1.3 کروڑ سے زائد عوام رائے دہی سے استفادہ کے لیے اہل ہیں جن میں 1.1 لاکھ پہلی مرتبہ رائے دہی میں حصہ لے رہے ہیں ۔ 13,022 پولنگ اسٹیشنس میں پولیس نے 3284 کو حساس اور 1464 کو انتہائی حساس قرار دیا ہ

TOPPOPULARRECENT