Sunday , September 24 2017
Home / سیاسیات / دہلی میں صدر راج کے نفاذ کی راہ ہموار کرنے کا الزام

دہلی میں صدر راج کے نفاذ کی راہ ہموار کرنے کا الزام

بلدی کارپوریشنس میں بڑے اسکامس ، سی بی آئی تحقیقات کروانے کجریوال کا مطالبہ
بنگلورو؍ نئی دہلی۔ 3 فروری (سیاست ڈاٹ کام) حکومت دہلی دو میونسپل کارپوریشنس کو 551 کروڑ روپئے کا قرض فراہم کرے گی۔ چیف منسٹر اروند کجریوال نے آج یہ بات بتائی اور الزام عائد کیا کہ بلدیہ کی جاری ہڑتال کے ذریعہ ایک ایسا ماحول تیار کرنے کی کوشش کی جارہی ہے جسے بنیاد بناکر قومی دارالحکومت میں صدر راج نافذ کیا جاسکے۔ اروند کجریوال اس وقت بنگلورو میں نیچروپیتھی علاج کروا رہے ہیں۔ انہوں نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ تین بی جے پی زیراقتدار میونسپل کارپوریشنس میں بڑے اسکامس ہوگئے ہیں۔ انہوں نے ان تمام کی سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ عام آدمی پارٹی حکومت بلدی اداروں کو کوئی رقم ادا شدنی نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ 551 کروڑ روپئے قرض کے علاوہ حکومت دہلی نارتھ دہلی میونسپل کارپوریشن کے لئے 142 کروڑ روپئے جاری کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ تاثر بھی دینے کی کوشش کی جارہی ہے کہ میونسپل کارپوریشنس کی موجودہ مالی خستہ حالت کے لئے حکومت دہلی ذمہ دار ہے، حالانکہ ان میونسپل کارپوریشن پر گزشتہ دس سال سے بی جے پی کا قبضہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہاں کئی بڑے اسکامس ہوئے ہیں۔ میونسپل ورکرس کی ہڑتال کے ذریعہ ایک ایسا ماحول تیار کیا جارہا ہے جس کے ذریعہ دہلی میں بحران دکھایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ مودی کا آمرانہ رویہ ہے۔ کسی نہ ان سے کہا ہے کہ وہ ایک ایسا ماحول تیار کررہے ہیں

جس کے ذریعہ دہلی میں صدر راج نافذ کیا جائے جیسا کہ اروناچل پردیش میں کیا گیا۔ اروند کجریوال نے آئندہ سال میونسپل انتخابات میں کامیابی کا یقین ظاہر کیا اور کہا کہ اس وقت بلدی کارپوریشنس کی حالت ایسی ہوگئی ہے کہ انہیں فوری تحلیل کرکے انتخابات منعقد کیا جانا چاہئے۔ انہوں نے بتایا کہ ایم سی ڈی ایمپلائز کی 19 یونینوں نے بلدی کارپوریشنس کو تحلیل اور انہیں حکومت دہلی کے تحت لانے کا مطالبہ کیا ہے۔ بلدی ورکرس بقایاجات کی ادائیگی کا مطالبہ کرتے ہوئے ہڑتال کررہے ہیں جو آج آٹھویں دن میں داخل ہوگئی۔ اس کی وجہ سے کچرے کی نکاسی کا عمل بری طرح متاثر ہوا ہے۔ اس ہڑتال میں اساتذہ، ڈاکٹرس، نرسیس اور بلدی اداروں سے وابستہ کنٹراکٹرس بھی شامل ہوگئے ہیں۔ کجریوال نے میونسپل کارپوریشن کے اُمور کی سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ کیا اور کہا کہ اگر سی بی آئی ہمارے معاملے میں تحقیقات کرسکتی ہے تو پھر بلدی کارپوریشنس کے معاملے میں بھی کیوں نہیں کرسکتی۔ ہم نے بلدی اداروں کے اکاؤنٹس کی جانچ کا حکم دیا تھا لیکن انہوں نے تعاون نہیں کیا۔ کجریوال نے کہا کہ ان کی حکومت نے جاریہ مالی سال تین بلدی کارپوریشنس کے لئے پیشرو سال کے مقابلے دوگنا فنڈس مختص کئے ہیں۔ انہوں نے ان فنڈس کو دیگر اغراض کیلئے استعمال کرنے کا الزام عائد کیا۔

TOPPOPULARRECENT