Sunday , August 20 2017
Home / Top Stories / دہلی میں کیمیائی گیس کے اخراج سے 450طالبات متاثر

دہلی میں کیمیائی گیس کے اخراج سے 450طالبات متاثر

کنٹیٹر ڈپو سے زہریلی گیس پھیلنے لگی، آنکھوں میں جلن اور سانس لینے میں دشواری ، مجسٹریل تحقیقات کا حکم : ڈپٹی چیف منسٹر سیسوڈیا

نئی دہلی 6 مئی (سیاست ڈاٹ کام) جنوب مشرقی دہلی کے تغلق آباد علاقہ میں دو اسکولس کے قریب کنٹینر ڈپو میں کیمیائی مادوں کے اخراج کی وجہ سے زہریلی آگ کے شعلے پھیل گئے جس کی وجہ سے تقریباً 450سے زائد طالبات متاثر ہوئیں اور اُنھیں ہاسپٹل میں شریک کیا گیا ہے۔ رانی جھانسی اسکول اور گورنمنٹ گرلز سینئر سکینڈری اسکول کی طالبات نے آنکھوں میں جلن اور سانس لینے میں دشواری کی شکایت کی۔ دہلی حکومت نے واقع کی مجسٹریٹ تحقیقات کا حکم دیا ہے۔ پولیس نے اِس معاملہ میں  تعزیرات ہند اور ماحولیاتی (تحفظ) ایکٹ کی مختلف دفعات کے تحت ایف آئی آر درج کیا ہے۔ مرکزی وزیر جے پی ندا نے تمام مرکزی زیرانتظام ہاسپٹلس کو ہدایت دی ہے کہ وہ متاثرین کی فوری مدد کریں۔ ایمس کے ڈاکٹروں کی ایک ٹیم کو کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے تیار رہنے کا حکم دیا گیا ہے۔ بسرا ہاسپٹل میں 10 تا 14 سال کی عمر کے 55 بچوں کو شریک کیا گیا ہے۔ یہاں کے ایک سینئر ڈاکٹر نے بتایا کہ ان کی حالت مستحکم ہے۔ پولیس کے مطابق 7.35 بجے صبح ٹیلی فون کال موصول ہوا جس میں بتایا گیا کہ تغلق آباد ڈپو کے کسٹمز علاقہ میں کیمیائی اخراج ہورہا ہے۔ اس ڈپو کے قریب دو اسکولس موجود ہیں۔ کنٹینر میں کمیکل چین سے درآمد کیا گیا تھا اور اسے سونی پت (ہریانہ) لیجایا جارہا تھا۔ واقعہ کے فوری بعد پولیس اور نیشنل ڈیزاسٹر ریسپانس فورس کے علاوہ کیاٹس ایمبولنس یہاں پہونچ گئی۔ ڈی سی بی (ساؤتھ ایسٹ) رومل بانیا نے بتایا کہ تغلق آباد ڈپو کے علاقہ میں کیمیائی اخراج کی وجہ سے رانی جھانسی اسکول کی طالبات نے آنکھوں میں جلن کی شکایت کی۔ پولیس کے مطابق 310 طالبات کا ہاسپٹلس میں علاج کیا گیا۔ تقریباً 107 طالبات کو مجیتیا ہاسپٹل اور 62 کو بترا ہاسپٹل میں شریک کیا گیا۔ بعض طالبات نے سانس لینے میں ہلکی سی دشواری، آنکھوں میں جلن اور ہلکے سر درد کی شکایت کی۔ بترا ہاسپٹل کے ڈاکٹر نے بتایا کہ تمام طالبات کی حالت بہتر ہے اور جنھیں آئی سی یو میں شریک کیا گیا تھا اب اُن کی حالت بھی مستحکم ہے۔ ڈپٹی چیف منسٹر منیش سیسوڈیا نے ایریا ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ اور ایس ڈی ایم کو واقعہ کی تحقیقات کا حکم دیا۔ آج اسکول میں امتحان مقرر تھا جسے اِس واقعہ کی وجہ سے منسوخ کردیا گیا۔ لیفٹننٹ گورنر انیل بائجل اور اپوزیشن لیڈر وجیندر گپتا نے ای ایس آئی ہاسپٹل پہونچ کر متاثرہ طالبات سے ملاقات کی اور اُن کی صحت کے بارے میں دریافت کیا۔ گپتا نے دہلی حکومت پر تنقید کرتے ہوئے واقعہ کی اعلیٰ سطحی تحقیقات کا مطالبہ کیا۔ دہلی کمیشن فار ویمن کی صدرنشین سواتی ملیوال نے بترا ہاسپٹل میں شریک طالبات سے ملاقات کے بعد کنٹینر ڈپو کی منتقلی کا مطالبہ کیا۔ اُنھوں نے ٹوئٹ کیاکہ یہ انتہائی افسوسناک واقعہ ہے اور ضرورت اِس بات کی ہے کہ کنٹینر ڈپو کو یہاں سے فوری منتقل کیا جائے۔ اپولو ہاسپٹل کے ذرائع نے کہاکہ 42 بچوں اور بڑوں کو یہاں شریک کیا گیا تھا جن کی حالت بہتر ہے۔ ایک اور اطلاع کے مطابق دونوں اسکولس کے تقریباً 450 طالبات کو ہاسپٹل میں شریک کیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT