Monday , May 29 2017
Home / Top Stories / دہلی یونیورسٹی نارتھ کیمپس میں کشیدگی، اسٹوڈنٹس کا احتجاج

دہلی یونیورسٹی نارتھ کیمپس میں کشیدگی، اسٹوڈنٹس کا احتجاج

اے بی وی پی کیخلاف کارروائی کا مطالبہ۔ پولیس ہیڈکوارٹرس تک احتجاجیوں کا جلوس، عمرخالد کا خطاب

نئی دہلی۔/23فبروری، ( سیاست ڈاٹ کام ) دہلی یونیورسٹی کے نارتھ کیمپس میں گزشتہ روز کی جھڑپوں کے تناظر میں آج کشیدگی کا ماحول ہے جبکہ اسٹوڈنٹس گروپس کے ارکان نے کئی مقامات پر احتجاج کرتے ہوئے اے بی وی پی کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے دہلی پولیس ہیڈ کوارٹرس پر بھی احتجاج کیا۔ رام جاس کالج کشیدہ مقام بن چکا ہے جہاں بائیں بازو سے ملحق اے آئی ایس اے اور آر ایس ایس کی سرپرستی والے اے بی وی پی کے اسٹوڈنٹس نے ایک دوسرے کو ہاکی اسٹکس سے نشانہ بنایا جس کے نتیجہ میں کئی طلباء زخمی ہوگئے۔ کالج میں صبح سے کلاسیس معطل ہیں۔ ویسے حکام کا دعویٰ ہے کہ یہ کشیدہ صورتحال کی وجہ سے نہیں بلکہ انتظامی وجوہات کے سبب ہے۔ جھڑپ کا سبب جے این یو اسٹوڈنٹس عمر خالد اور شہلا راشد کو ایک سمینار سے خطاب کیلئے مدعو کرنا بنا ہے۔ خالد کو غداری کے الزام کا سامنا ہے۔ اسے احتجاجوں کا کلچر کے موضوع پر سمینار سے خطاب کیلئے دعوت دی گئی لیکن اے بی وی پی کی جانب سے مخالفت اور کشیدگی پیدا ہونے کے بعد کالج حکام نے اس سمینار سے دستبرداری اختیار کرلی۔ جے این یو اور ڈی یو کے اسٹوڈنٹس جو آل انڈیا اسٹوڈنٹس اسوسی ایشن ( اے آئی ایس اے ) کے ارکان ہیں انہوں نے دہلی پولیس ہیڈکوارٹرس بمقام آئی ٹی او پر احتجاج منظم کیا اور کانگریس کے اسٹوڈنٹس ونگ نیشنل اسٹوڈنٹس یونین آف انڈیا ( این ایس یو آئی ) نے ماریس نگر پولیس اسٹیشن تک امن مارچ نکالا۔

خالد جو گزشتہ روز اور اس سے قبل کے احتجاجوں میں شریک نہیں ہوا تھا، آئی ٹی او میں احتجاجیوں کے ساتھ شامل ہوگیا اور اے بی وی پی سے آزادی کے نعرے لگائے نیز ان کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کا مطالبہ کیا۔ خالد نے احتجاجیوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اگر میں نے رام جاس میں تقریر کی ہوتی تو صرف چند افراد ہی سنے ہوتے، اب سارا ملک مجھے سن رہا ہے۔ دہلی پولیس میرے خلاف چارج شیٹ داخل نہیں کرپائی ہے اور ان کا کہنا ہے کہ میں قوم دشمن ہوں اور میرے دہشت گرد گروپوں کے ساتھ روابط ہیں۔ گزشتہ روز سے جاری صورتحال کے تناظر میں نارتھ کیمپس میں پولیس کی بھاری جمعیت تعینات کردی گئی ہے جبکہ ڈی یو وائس چانسلر یوگیش تیاگی نے اسٹوڈنٹس سے تشدد پر آمادہ نہ ہونے کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام اور اسٹوڈنٹس کو کیمپس میں امن برقرار رکھتے ہوئے صبر سے کام لینا چاہیئے۔ کسی بھی قسم کے تشدد سے بچنا چاہیئے۔ اس سے نہ کوئی حل نکلے گا اور نہ ہی کوئی مثبت چیز پیش آئے گی۔ این ایس یو آئی ممبرس نے رگھوپتی راگھو راج رام کا نعرہ لگاتے ہوئے ماریس نگر پولیس اسٹیشن کی طرف جلوس نکالا اور اے بی وی پی کی پرتشدد حرکتوں کی مذمت کی۔ لگ بھگ 50 ارکان اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد ( اے بی وی پی) بھی نارتھ کیمپس میں آرٹس فیکلٹی کے باہر جمع ہوگئے اور دوہرایا کہ وہ اس یونیورسٹی میں جے این یو جیسے حالات کا اعادہ ہونے نہیں دیں گے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT