Thursday , September 21 2017
Home / Top Stories / ’’دیش کا چوکیدار‘‘آرام کی نیند سو رہا ہے

’’دیش کا چوکیدار‘‘آرام کی نیند سو رہا ہے

غریب عوام کی نیند حرام ، ترکاری فروخت کرنے والا چیک نہیں لیتا:کپل سبل
لکھنؤ26  نومبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی پر پارلیمنٹ سے فرار کا الزام عائد کرتے ہوئے کانگریس لیڈر کپل سبل نے کہاکہ ’’دیش کا چوکیدار‘‘ مزے کی نیند سو رہا ہے اور غریب عوام کی راتوں کی نیند اُڑ گئی ہے۔ اُنھوں نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ وزیراعظم بطور احترام اپنا ماتھا ٹیک کر پارلیمنٹ میں داخل ہوئے تھے لیکن اب پارلیمنٹ میں بات کرنے سے ہی فرار اختیار کررہے ہیں۔ ’’ملک کے چوکیدار‘‘ نے اپنی آنکھیں بند کرلیں اور مزے کی نیند سو رہے ہیں جبکہ غریب عوام کی راتوں کی نیند حرام ہوچکی ہے۔ کپل سبل نے کہاکہ ’’کرنسی کبھی کالی نہیں ہوتی، لیکن جو ایسی سوچ رکھتے ہیں اُن کی سوچ میں ہی یہ خرابی پائی جاتی ہے۔ دراصل جو لین دین ہوتا ہے وہ کالا ہوتا ہے‘‘۔ وزیراعظم کو معاشی صورتحال کی حقیقت کا اندازہ نہیں ہے۔ اُنھوں نے الزام عائد کیاکہ غریب آدمی کے ہاتھوں میں موجود نوٹ کو بھی کالا دھن قرار دیا جارہا ہے۔ کرنسی کا چلن بند کرنے کی اہم وجہ معاشی نہیں بلکہ سیاسی ہے۔ یہ صرف اترپردیش انتخابات میں کامیابی کے لئے کیا جارہا ہے۔ اِس کا مقصد ایک غیر متوقع قدم اُٹھاتے ہوئے مودی کو غریبوں کا مسیحا کا طور پر پیش کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

کپل سبل نے کہاکہ وزیراعظم کو کرنسی بند کرنے کے اثرات کا اندازہ نہیں۔ وہ نہیں سمجھ سکتے کہ محنت کش طبقہ، کسان اور دیگر کس طرح اپنی روز مرہ کی زندگی گزارتے ہیں۔ وہ نہیں جانتے کہ ہول سیل اور ریٹیل مارکٹ میں کس طرح کا رجحان پایا جاتا ہے۔ ترکاری فروخت کرنے والا کبھی چیک کے ذریعہ رقم وصول نہیں کرتا۔ کپل سبل نے اعداد و شمار پیش کرتے ہوئے دعویٰ کیاکہ 125 کروڑ آبادی میں صرف 60 کروڑ بینک اکاؤنٹس ہیں اور اِن میں 32 کروڑ ایسے اکاؤنٹس ہیں جن میں کئی سال سے کوئی لین دین نہیں ہوا۔ اُنھوں نے جاننا چاہا کہ کیا یہ اکاؤنٹ رکھنے والے اپنے پاس کالا دھن بھی رکھتے ہیں۔ اُنھوں نے حکومت سے اُن تمام افراد کے ناموں کا انکشاف کرنے کا مطالبہ کیا جن کے بیرونی ممالک میں اکاؤنٹس ہیں۔ انھوں نے کہاکہ جب حکومت کے پاس فہرست ہے تو پھر اُسے منظر عام پر لانے میں کیا مسئلہ درپیش ہے۔ اِس دوران دہلی کانگریس صدر اجئے ماکن نے نوٹ بندی پر وائٹ پیپر ’’نوٹ پہ چرچہ‘‘ جاری کرتے ہوئے نریندر مودی کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہاکہ انتہائی ناقص اور خراب انداز میں یہ کام کیا گیا، اِس سے حکومت کی جھوٹ بے نقاب ہوگئی۔

TOPPOPULARRECENT