Monday , June 26 2017
Home / اضلاع کی خبریں / دینی مدارس اور قرآن کے مکاتب سے محبت ایمان کا حصہ

دینی مدارس اور قرآن کے مکاتب سے محبت ایمان کا حصہ

 

سنگاریڈی میں جلسہ دستاربندی سے مولانا شفیع الدین کا خطاب
سنگاریڈی ۔ 27 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : روئے زمین پر جب تک قرآن مجید باقی رہے گا امت باقی رہے گی اور جہاں پر بھی قرآن مجید کی تعلیمات پر عمل آوری نہیں ہوگی ۔ امت زوال پذیر ہوجائے گی جو قرآن مجید کی حفاظت کریں گے ۔ اللہ تبارک و تعالیٰ ان کا محافظ و نگہبان ہوگا جب تک امت قرآن مجید سے جڑی رہے گی ۔ اللہ تبارک و تعالیٰ امت کو عزت کا تاج عطا کریں گا ۔ ان خیالات کا اظہار مولانا محمد شفیع الدین ندوی نقشبندی نے مدرسہ عربیہ نعمانیہ پرشانت نگر سنگاریڈی کے 16 ویں سالانہ جلسہ ’ دستار بندی و استقبال رمضان ‘ سے اپنے صدارتی خطاب میں کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ماہ رمضان المبارک کو اللہ تعالی نے بندوں کے درمیان جنت کے باٹنے اور دوزخ سے بچانے کا ذریعہ بنایا ہے ۔ اسی لیے ایک حدیث میں ہے کہ رمضان المبارک میں شب روز میں بندوں کی ایک دعا ضرور مستجاب و مقبول ہوتی ہے بس بندوں کو رمضان المبارک میں بکثرت دعا ، تلاوت ، صوم و صلوۃ ، سحر و تراویح ، صدقہ و خیرات میں مشغول ہوجانا چاہیے۔ مولانا نے دینی مدارس کی ضرورت و اہمیت اور افادیت پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ دینی مدارس اور قرآن کے مکاتب سے محبت ایمان کا حصہ ہے ۔ دینی مدارس دراصل اسلام کے محفوظ قلعے ہیں جہاں سے کتاب و سنت کے سرحدوں کے محافظ اور سپاہی تیار ہوتے ہیں ۔ اس لیے دینی مدارس کا قولی ، فعلی اور مالی بالخصوص رمضان المبارک میں تعاون بے حد ضروری ہے ۔ مولانا محمد حنیف خاں قاسمی ناظم مدرسہ الانصار شاہ پور نگر حیدرآباد نے کہا کہ اللہ تبارک و تعالیٰ نے تمام مخلوقات میں انسان کو اشرف المخلوقات بنایا ہے ۔ اس کی وجہ و امتیاز قرآن مجید نے کہا ہے کہ علم دین ہے علم کی مثال ایک روشنی کی ہے جس کی پاس علم دین نہ ہو تو وہ شریعت محمدیؐ سے صحیح طور پر واقف نہیں ہوتا ۔ انہوں نے مدرسہ عربیہ نعمانیہ سنگاریڈی کے 9 خوش نصیب طلباء کی تکمیل حفظ قرآن مجید پر مدرسہ کے اساتذہ ، منتظمین اور معاونین کو مبارکباد پیش کی ۔ آج دینی مدارس سے تکمیل حفظ قرآن مجید کرنے والے طلباء پر سالانہ 15 ہزار روپئے خرچ کیے جارہے ہیں جب کہ دور حاضر میں حصول عصری علوم کے لیے اولیائے طلباء 25 ہزار تا ایک لاکھ روپئے خرچ کررہے ہیں ۔ لہذا اپنے نونہالوں کو عصری تعلیم کے ساتھ دینی تعلیم سے بھی آراستہ کرنا وقت کا اہم ترین تقاضہ ہے ۔ پروفیسر فیض احمد خاں ڈین اکیڈیمک آئی آئی ٹی حیدرآباد ، مولانا قاسم اطہر قاسمی مدرس مدرسہ خیر العلوم رنجھول نے بھی خطاب کیا ۔ حافظ و قاری محمد اشفاق احمد مدرس مدرسہ عربیہ نعمانیہ کے قرات کلام پاک سے جلسہ کا آغاز ہوا جب کہ مولانا محمد مصباح الدین حسامی اور مولانا محمد سلمان سلطان پوری نے ہدیہ نعت شریف پیش کی ۔ قبل ازیں مدرسہ عربیہ نعمانیہ کے طلباء نے تقریری و تعلیمی مظاہرہ پیش کیا ۔ مولانا محمد شفیع الدین ندوی نقشبندی نے 9 خوش نصیب حفاظ کرام کو سورہ مرسلاۃ کی آخری آیات پڑھا کر تکمیل حفظ قرآن مجید اور دستاربندی کی ۔ بعد ازاں مولانا محمد طاہر علی شاہ نوری چشتی القادری صدر متحدہ اہل سنت و الجماعت سنگاریڈی اور جناب محمد اطہر محی الدین شاہد امیر مقامی جماعت اسلامی ہند سنگاریڈی نے بہترین تعلیمی و تقریری مظاہرہ کرنے والے مدرسہ عربیہ نعمانیہ کے طلباء کو انعامات سے نوازا ۔ اس موقع پر مولانا محمد سلیمان صوفی سرپرست اعلیٰ النعمان چیارٹیبل ٹرسٹ سنگاریڈی ، سید فرید الدین مدرس ، مولانا سید فصیح الدین قاسمی صدر جمعیت العلماء سنگاریڈی ، ایم اے سبحان عبدالجواد مبین ، محمد اسماعیل ، محمد فضل الدین پرویز ، محمد قمر الدین بخاری و دیگر موجود تھے ۔۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT