Wednesday , October 18 2017
Home / ہندوستان / دیوالی پر چینی اشیاء کی فروخت میں 45% کمی متوقع

دیوالی پر چینی اشیاء کی فروخت میں 45% کمی متوقع

نئی دہلی۔9 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) چینی اشیاء جیسے لائٹس، گفٹ ایٹمس، قمقمے اور دیوار پر آویزاں کی جانے والی اشیاء کی فروخت میں گزشتہ سال کے مقابل اس دیوالی 40-45% کمی ہوسکتی ہے کیوں کہ ایک رپورٹ کے مطابق بیشتر ہندوستانی لوگ ممکن ہے دیسی اشیاء جیسے مٹی کے دیئے (قمقمے) استعمال کرنے کو ترجیح دیں گے۔ دیوالی جو روشنیوں کا تہوار ہے اور جو ہندو سال نو کے ساتھ آتا ہے، اس موقع پر گزشتہ سال چینی اشیاء کی فروخت میں 30 فیصد گراوٹ ریکارڈ کی گئی تھی۔ اسوچم۔سوشل ڈیولپمنٹ فائونڈیشن کے سروے نے احمد آباد، بنگلورو، بھوپال، چینائی، دہرادون، دہلی، حیدرآباد، جئے پور، لکھنو اور ممبئی کے ہول سیلرس، ریٹیلرس اور ٹریڈرس سے رابطہ قائم کیا تاکہ ہندوستان بھر میں چینی پراڈکٹس کے لیے طلب کا اندازہ قائم کیا جاسکے۔ اسوچم نے کہا کہ گزشتہ سال کے مقابل اس مرتبہ دیوالی پر چینی اشیاء کی کھپت میں تقریباً 40 تا 45 فیصد کمی نظر آتی ہے۔ جن چینی اشیاء کی زیادہ مانگ ہے ان میں فینسی لائٹس، لیمپ شیڈس، گنیش اور لکشمی کی مورتیاں، رنگولیاں اور پٹاخے وغیرہ شامل ہیں۔ سروے کے مطابق اس مرتبہ لوگ چینی اشیاء کے مقابل ہندوستانی پراڈکٹس کو ترجیح دینے پر مائل ہیں۔ سروے سے معلوم ہوا کہ الیکٹرانک ایٹمس جیسے ایل سی ڈیز، موبائل فونس اور دیگر ایٹمس جو چین میں تیار کیئے گئے، ان کی طلب میں بھی 15 تا 20 فیصد کمی ہوگئی ہے۔ جن دکانداروں نے یہ سروے میں حصہ لیا انہوں نے کہا کہ زیادہ تر گاہک ہندوستانی لائٹس یا مٹی کے دِیوں کا مطالبہ کررہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT