Sunday , September 24 2017
Home / Top Stories / دیکھیں: یوپی میں دن کے اجالے میں14لڑکوں نے لڑکیوں کے ساتھ کی چھیڑ چھاڑ‘ ویڈیو ہوا وائیرل

دیکھیں: یوپی میں دن کے اجالے میں14لڑکوں نے لڑکیوں کے ساتھ کی چھیڑ چھاڑ‘ ویڈیو ہوا وائیرل

لکھنو: ایک ویڈیو جس میں د و لڑکیو ں کے ساتھ بدسلوکی اور چھیڑ چھاڑ 40نوجوان اترپردیش کے ضلع رامپور میں کررہے ہی اور مذکورہ ویڈیو سوشیل میڈیاپر تیزی کے ساتھ وائیرل بھی ہورہا ہے۔ اس ویڈیو میں لڑکوں کا ایک گروپ لڑکیو ں کے ساتھ گاؤں کے سنسان علاقے میں بدسلوکی کرتا ہوا دیکھائی دے رہا ہے۔

لڑکے ان میں سے ایک لڑکی کے ساتھ چھیڑ چھاڑ اور بدسلوکی کررہے ہیں۔ جبکہ ایک لڑکے نے اس کو گود میں ہی اٹھالیا۔جبکہ لڑکیاں رحم کی درخواست کرتی ہوئی دیکھائی دے رہی ہے جبکہ ان میں سے ایک لڑکا واقعہ کی منظر کشی کررہا ہے۔ ایک متاثرہ نے کہاکہ ہماری درخواست کے باوجود مدد کے لئے کوئی آگے نہیںآیا پولیس سے انصاف کا بھی اس نے مطالبہ کیا۔متاثر ہ نے کہاکہ ’’ ہم نے قریب کے پٹرول پمپ پر پٹرول بھرانے کے لئے رکے۔

بعد ازاں میں اور میری بہن بیت الخلاء کے لئے گئے جہاں پر 10-12لڑکوں نے ہمارے ساتھ بدسلوکی کی۔ مدد کے لئے ہم نے آواز بھی لگائی مگر کسی نے ہمیں نہیں بچایا۔ میں انصاف کا مطالبہ کرتے ہوں‘‘۔ مذکورہ 14بچوں کے خلاف کیس درج ہونے کے بعد شناخت کئے گئے اصل مجرم کو پولیس نے حراست میں لے لیاہے۔پرنسپل سکریٹری ( ہوم) ارویند کمار نے کہاکہ ’’ چودہ لوگوں کے خلاف میں ایک ایف ائی آر در ج کیاگیا ہے۔ اصل ملزم شہنواز حراست میں ہے اور پولیس اس ضمن میں تحقیقات کررہی ہے‘‘۔

انہوں نے کہاکہ متاثرہ خاتو ن کی شناخت اب تک نہیں ہوئی ہے اور اس ضمن میں اب تک پولیس میں کوئی شکایت بھی درج نہیں کرائی گئی۔تاہم پولیس نے ذاتی طو ر پر ایف ائی آر درج کیا ہے۔ ملزمین کے متعلق انہوں نے کہاکہ شہنواز‘ نوید‘ فرمان‘جہانے عالم اور صدام ضلع رامپور کے کوا کھیرا گاؤں کے رہنے والے ہیں۔ واقعہ 22مئی کو پیش آیاتھا۔

واقعہ کے پیش نظر ویمن کارکن یوگی ادتیہ ناتھ حکومت کو اپنی شدید کا تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے ریاست اترپردیش میں نظم نسق کی بڑے سوال کھڑے کئے۔خاتون جہدکار براندا ایڈیگی نے اے این ائی سے کہاکہ ’’یہ بہت شرم کی بات ہے کہ ہمارے ملک میں ایسے واقعات رونما ہورہے ہیں‘‘۔ایک طرف تو تمام سیاست داں خاص طور پر وزیراعظم نریندر مودی ’بیٹی بچاؤ ‘ بیٹی پڑھاؤ‘ کی بات کرتے ہیں اور دوسری جانب اس قسم کے واقعات ملک میں رونما ہورہے ہیں۔

 

TOPPOPULARRECENT