Thursday , March 30 2017
Home / اضلاع کی خبریں / دیگلورضلع پریشد، پنچایت سمیتی کے آج انتخابات

دیگلورضلع پریشد، پنچایت سمیتی کے آج انتخابات

شیوسینا، بی جے پی اختلافات سے کانگریس اور راشٹروادی کو فائدہ کا امکان
دیگلور۔/15فبروری، ( قاضی انصار علی ارمان ) ضلع پریشد کی پانچ اور پنچایت سمیتی کیلئے دس نشستوں کیلئے دیگلور اسمبلی حلقہ میں بلاک کیلئے اکتیس31تو سرکلس کیلئے  39امیدوار میدان میں ، یہاں 16فبروری کو ووٹ ڈالے جائیں گے۔ بی جے پی ۔ شیوسینا برسراقتدار ریاستی جماعت میں خلفشار اب بام عروج پر پہنچ چکا ہے جس کے باعث کانگریس اور راشٹروادی کانگریس پارٹی کیلئے اچھے دن آنے والے ہیں۔ دیگلور حلقہ اسمبلی کے ایم ایل اے مسٹر سبھاش ساہنے ( شیوسینا) نے حلقہ ضلع پریشد ایکلارہ تعلقہ مکھیڑ سے اپنی بہو کو محفوظ نشست کیلئے شیوسینا پارٹی سے کھڑا کیا ہے اب ان کا تمام زور وہیں پر لگا ہوا ہے تو ادھر دیگلور کو کون دیکھے گا۔ حلقہ ٰضلع پریشد شاہ پور تعلقہ دیگلور سے سابق چیرمین پنچایت سمیتی مسٹر مادھوراؤ میساڑے ( کانگریس ) کے ٹکٹ پر کھڑے ہیں یہ لنگایت سماج کے ہونے سے اس حلقہ و پنچایت سرکل تملور میں بھی لنگایت سماج کے کثیر ووٹ ہیں جبکہ کولی سماج نے بھی کانگریس کی حمایت کا اعلامیہ جاری کردیا ہے۔ اس حلقہ و سرکل سے کانگریس کی جیت یقینی بتائی جاتی ہے جبکہ آر ایس پی  کے یہاں سے مسٹر نیورتی کامبلے سانگوکیر بھی کھڑے ہیں اس سے قبل کامبلے نے ضلع پریشد کے سابق صدر سنبھاجی منڈگی کرکو صرف چار ووٹوں سے ہرایا تھا، دوسری دفعہ ضلع پریشد میں جانے کے خواہشمند ہیں چونکہ مسٹر میساڑے گروجی حال ہی میں راشٹروادی پارٹی چھوڑ کر کانگریس میں آگئے اور انہیں سابقہ چیف منسٹر و صدر کانگریس مہاراشٹرا اسٹیٹ نے فوری پارٹی کا ٹکٹ بھی دے دیا تو کانگریس کے سینئر کارکنان اور راشٹروادی کے بھی کارکن اندرونی طور پر نیورتی کامبلے ( آر ایس پی ) کو ساتھ دے سکتے ہیں۔ خانہ پور حلقہ ضلع پریشد و سرکل میں کانگریس کے ممتاز لیڈر انیل پٹیل خانہ پور کرکی اہلیہ انورادھا پٹیل اور سرکل میں شیویتا پٹیل ونالی سرکل میں ایڈوکیٹ گریدھر پٹیل سوگارنکر سے کڑا مقابلہ بی جے پی کے ایڈوکیٹ اشوک دیسائی ( یگاونکر کی اہلیہ شیلا بائی کے ساتھ ہے۔ حلقہ ضلع پریشد کوڈ کھیڑ میں ایڈوکیٹ رام راؤ نائیک کانگریس سے اور کوکنے اشوک بی جے پی سے مندویلوار سرینواس ( شیوسینا ) اور شریمتی اندرا بائی گیانیشور ( راشٹر وادی ) سے چار رخی مقابلہ ہے۔ جبکہ سرکل میں مکتا بائی کامبلے، شیواجی دیشمکھ بلے گاؤنکر سرکل کوڈکھیڑ سے کانگریس کے ٹکٹ پر دوسری مرتبہ پنچایت سمیتی میں جائیں گے۔ یہاں پر شیو سینا کا اچھا اثر ہے لیکن بی جے پی اور راشٹروادی نے ( مرد ) حلقہ انتخاب پر خاتون کو بلا وجہ ٹکٹ دینے سے خود راشٹروادی کے ذی اثر کارکنان ناراض ہیں تو ان کی ناراضگی کا فائدہ یہاں پر کانگریس کو مل سکتا ہے۔ ضلع پریشد حلقہ مرکھیل میں بی جے پی نے تجربہ کار سیاستداں سابقہ ایجوکیشن کمیٹی چیرمین مسٹر وینکٹ راؤ پٹیل کو ٹکٹ دیا ہے۔ اور ان کا مقابلہ کانگریس کے ڈاکٹر وجئے دھومالے اور کانگریس کے سینئر قائد آنجہانی گویندر راؤپٹیل جھریکر ایم ایل سی کے صاحبزادہ جبکہ شیوسینا سے سوریہ کانت پٹیل کو ٹکٹ دیاہے تو اس چہاررخی مقابلہ میں بی جے پی کے تجربہ کار قائد ہونے کے باعث یہاں مسٹر وینکٹ راؤ پٹیل کی جیت یقینی طور پر دکھائی دے رہی ہے۔ البتہ سرکل مرکھیل اور مانور میں راشٹروادی کا زور اچھا ہے اس لئے یہاں کراس ووٹنگ ہونے کا شبہ زیادہ ہے،کانگریس ایک آدھ نشست لے پائے گی۔

ضلع پریشد حلقہ ہینے گاؤں میں چھ رخی مقابلہ ہے جہاں شروع سے ہی راشٹراوادی کانگریس کا زور رہا ہے۔ وہاں پر شیوسینا نے سابقہ چیرمین  ویشالی  ویویک کھٹواڑکر کو بی جے پی نے راٹھور شاردار دیوی شنکر راؤ کو میدان میں اتارا ہے۔ جبکہ کانگریس نے ایکدم نوسکھ ( نئے ) امیدوار شریمتی مند کھیڑ کے پورنیتا کو زبردستی ٹکٹ دیا ہے تو ان کی لڑائی میں راشٹراوادی عوام اس مقبول لیلار نوجوان حامی رمیش پندرگے کی اہلیہ شیتل بائی کامیاب ہوسکتی ہیں جبکہ ہینے گاؤں پنچایت سرکل سے شریمتی ویشالی شیواجی ( راشٹر واد)  وجھر سرکل سے بالاجی نائیکواڑی کا اچھا اثر دیکھا جارہا ہے۔ راشٹروادی کے جنرل سکریٹری رمیش دیشکھ سلونیکر، ہجو سیٹھ چمکوڈے عرف حاجی میاں، تاناجی شنڈے یہ تمام این سی پی لیڈرس یہاں انتھک محنت کامیابی کیلئے اٹھارہے ہیں جبکہ سینئر لیڈرس ایڈوکیٹ قاضی سید محسن علی، نشاددیشمکھ، اویناش نیلم وار نائب صدر بلدیہ تعلقہ کارگذار صدر لکشمی کانت پدم وار، ایڈوکیٹ قاضی تحسین علی، سید محمودکونسلرکے علاوہ کانگریس کے سابق ایم ایل اے راؤ صاحب انتاپورکر، صدر نومنتخبہ موگلاجی شرشٹواڑ، شنکر نتی واد ( شہر صدر کانگریس) بھی اپنی اپنی پارٹیوں کے نمائندوں کی کامیابی کیلئے کوشاں ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT