Saturday , July 22 2017
Home / Top Stories / ذاکر نائیک الیکٹرانک میڈیا پر سمن کی جواب دہی کیلئے تیار

ذاکر نائیک الیکٹرانک میڈیا پر سمن کی جواب دہی کیلئے تیار

ہندوستان میں سخت مخالفانہ ماحول کا سامنا ، غیرجانبدار تحقیقات ناممکن ، متنازعہ مبلغ کا دعویٰ

ممبئی۔ 21 فروری (سیاست ڈاٹ کام) متنازعہ مبلغ اسلام ذاکر نائیک نے رقمی ہیر پھیر کے مقدمہ کے تحت اپنے خلاف جاری کردہ سمن کا جواب دیا ہے اور کہا کہ وہ کسی الیکٹرانک میڈیا کے ذریعہ اپنا جواب دینے تیار ہیں۔ نائیک کے وکیل مہیش مولے نے کہا کہ ’’میرے موکل براہ اسکائپ یا کسی بھی دوسرے الیکٹرانک ذریعہ سے کوئی بھی بیان دینے تیار ہیں جس سے آپ کی تحقیقات میں مدد مل سکتی ہے‘‘۔ اسلامک ریسرچ فاؤنڈیشن کے بانی ذاکر نائیک نے اپنے وکیل کے نام مکتوب میں یہ انکشاف کیا گیا ہے۔ نائیک نے کہا کہ وہ ایک این آر آئی ہیں اور انہیں کوئی سمن موصول نہیں ہوا ہے، تاہم کہا کہ 2 فروری کو ان کے بھائی نے سمن وصول کیا تھا جس میں اُن (نائیک) سے 9 فروری کو انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کے دفتر میں حاضری کے لئے کہا گیا تھا۔ نائیک نے دعویٰ کیا کہ یہ مکتوب بجا طور پر سمن کہلانے کے مناسب نہیں تھا۔ انہوں نے انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ سے یہ درخواست کی کہ ان سے کسی بھی سوال سے قبل غیرقانونی سرگرمیوں کے انسداد سے متعلق قانون کے ٹریبیونل کے احکام کا انتظار کیا جائے۔ نائیک کی غیرسرکاری تنظیم اسلامک ریسرچ فاؤنڈیشن پر غیرقانونی سرگرمیوں کے انسدادی قانون کے تحت گزشتہ سال پانچ سالہ پانبدی عائد کردی گئی تھی۔ ذاکر نائیک نے دعویٰ کیا کہ ہندوستان میں انہیں فی الحال انتہائی مخالفانہ ماحول کا سامنا ہے چنانچہ ان کیخلاف غیرجانبدارانہ تحقیقات ناممکن ہیں۔ انہوں نے انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ میں شخصی طور پر حاضری کیلئے چند ماہ کی مہلت دینے کی درخواست بھی کی۔ باور کیا جاتا ہے کہ نائیک اپنی گرفتاری سے بچنے کیلئے سعودی عرب میں مقیم ہیں۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT