Friday , September 22 2017
Home / Top Stories / ذبیحہ گاؤ کا مسئلہ بابری مسجد مسئلہ سے زیادہ سنگین

ذبیحہ گاؤ کا مسئلہ بابری مسجد مسئلہ سے زیادہ سنگین

دلتوں اور مسلمانوں پر حملے فرقہ پرستوں کی سازش کا حصہ ، حکمراں سیاسی مفادات کے غلام ، ممتاز جہدکار رام پنیانی کا لیکچر

حیدرآباد ۔ /9 اگست (سیاست نیوز) ملک میں بی جے پی کی زیرقیادت این ڈی اے حکومت کے اقتدار میں آنے کے بعد سے دلتوں ، مسلمانوں ، قبائیلیوں ، معقولیت پسندوں اور خواتین پر مظالم میں اضافہ ہوا ہے اور یہ سب کچھ صرف اور صرف سیاسی مقاصد کے حصول اور ہندوتوا کے ایجنڈہ پر عمل آوری کو یقینی بنانے کیلئے کیا جارہا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انسانی حقوق کے جہدکار ہندو مسلم اتحاد کے علمبردار ادیب اور فرقہ پرستوں کو ان کا حقیقی چہرہ دکھانے کیلئے مشہور مسٹر رام پنیانی نے اپنے خصوصی لیکچر میں کیا۔ جس کا اہتمام سیاست کے محبوب حسین جگر ہال میں روزنامہ سیاست اور سواراج ابھیان امن کمیٹی نے کیا تھا ۔ ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں نے صدرات کی ۔ ملک میں فر قہ وارانہ ہم آہنگی کے فروغ کی خاطر مکمل طور پر مصروف ہونے کیلئے آئی آئی ٹی ممبئی کی باوقار ملازمت سے استعفی دینے والے مسٹر رام پنیانی نے اپنے لیکچر میں نریندر مودی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیا اور کہا کہ اگرچہ مرکز میں بی جے پی کی زیرقیادت این ڈی اے حکومت ہے لیکن ہر معاملہ میں ایک ہی شخص چھایا ہوا ہے ۔ رام پنیانی کا کہنا تھا کہ مودی حکومت نے ترقی کے بلند بانگ دعوے کئے تھے ۔ سب کا ساتھ سب کا وکاس کے نعرہ لگائے تھے ۔ عوام کو اچھے دنوں کے خواب دکھاکر یہ بھی وعدہ کیا تھا کہ ہر ہندوستانی کے بنک اکاؤنٹ میں 15 لاکھ روپئے جمع کئے جائیں گے لیکن کوئی بھی وعدہ وفا نہ ہوسکا ۔ صرف ایک ہی آدمی (مودی) کی حکومت چل رہی ہے ۔ وہ نانا شاہ کے رول میں اپنی پالیسیوں پر عمل کرارہا ہے ۔ رام پنیانی نے مودی کا نام لئے بناء یہ بھی کہا کہ وہ جھوٹ کو سچ بتانے میں ماہر ہیں ۔ وہ اس قدر جھوٹ بولتے ہیں کہ سادہ لوح عوام یہ سمجھ بیٹھتی ہے کہ ملک حقیقت میں ترقی کررہا ہے ۔ اس ضمن میں انہوں نے اڈلف ہٹلر اور ان کے وزیر پروپگنڈہ  جوزف گوبپلز کی مثال پیش کرتے ہوئے کہا کہ گوبپلز کہتا تھا کہ آپ کسی جھوٹ کو سو بار بولیں تو لوگ اسے سچ ماننے لگتے ہیں ۔ (سلسلہ صفحہ 8 پر)

TOPPOPULARRECENT