Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / رائس ملرس کو لیوی طریقہ کار سے استثنیٰ دینے کا مطالبہ

رائس ملرس کو لیوی طریقہ کار سے استثنیٰ دینے کا مطالبہ

کسانوں کو نقصانات سے بچایا جاسکتا ہے ، گنپا ناگیندر و دیگر کی پریس کانفرنس
حیدرآباد ۔ 12 ۔ اکٹوبر : ( سیاست نیوز ) : رائس ملرس اسوسی ایشن تلنگانہ اسٹیٹ نے مرکزی حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور پر رائس ملرس کے لیے لیوی طریقہ کار کی برخاستگی سے متعلق کئے گئے اعلان سے فوری دستبرداری اختیار کرتے ہوئے لیوی کے حسب سابق طریقہ کار پر عمل آوری کے احکامات جاری کرے تاکہ لیوی کی برخاستگی کے نتیجہ میں رائس ملنگ انڈسٹریز کے علاوہ کسان طبقہ کو ہونے والے نقصانات سے محفوظ رکھا جاسکے ۔ یہ بات آج یہاں صدر رائس ملرس اسوسی ایشن تلنگانہ اسٹیٹ مسٹر گنپا ناگیندر اور جنرل سکریٹری اسوسی ایشن مسٹر وڈی موہن ریڈی نے پریس کانفرنس کے دوران بتائی ۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست تلنگانہ میں فی الوقت زائد از 2000 رائس ملس موجود ہیں جس میں زائد از ایک لاکھ ورکرس برسر روزگار ہیں جب کہ حکومت کے اس اقدام کے نتیجہ میں رائس ملنگ انڈسٹریز جو پہلے ہی سے معاشی و دیگر مسائل سے دوچار ہیں مزید معاشی بحران کا شکار ہوجائیں گے اور وہ دن دور نہیں ہے کسانوں کی طرح رائس ملرس بھی خود کشی کی راہ اپنانے پر مجبور ہوجائیں گے ۔ انہوں نے بتایا کہ سابق میں رائس ملرس کی جانب سے زائد از 40 تا 50 لاکھ ٹن دھان کسانوں سے خریدی جاتی تھی ، لیکن لیوی کی برخاستگی کے نتیجہ میں دھان کی خریدی کے اختیارات ختم ہوچکے ہیں ۔ انہوں نے مرکزی و ریاستی حکومتوں پر زور دیا کہ وہ لیوی کے طریقہ کار کو حسب سابق برقرار رکھتے ہوئے رائس ملرس کو درپیش مسائل کے حل کے لیے ایک کمیٹی تشکیل دیں ۔ انہوں نے بتایا کہ اسوسی ایشن کے دیرینہ حل طلب مسائل کی یکسوئی کے لیے دسہرہ تہوار کے بعد اندرا پارک پر بڑے پیمانے پر دھرنا پروگرام منظم کرنے کا عنقریب فیصلہ کیا جائے گا ۔ اس موقع پر اسوسی ایشن قائدین مسرز سمپت کمار ، اشوک کمار ، رمیش بابو اور دیگر موجود تھے ۔۔

TOPPOPULARRECENT