Tuesday , August 22 2017
Home / کھیل کی خبریں / رائنا یا کیدار، کسی ایک کا انتخاب انتظامیہ کیلئے مسئلہ

رائنا یا کیدار، کسی ایک کا انتخاب انتظامیہ کیلئے مسئلہ

نئی دہلی ۔18 اکتوبر ۔(سیاست ڈاٹ کام) کپتان مہندر سنگھ دھونی اور کوچ انیل کمبلے کیلئے بائیں ہاتھ کے آل راؤنڈر سریش رائنا کے صحتیاب ہونے کی وجہ سے ٹیم کے قطعی گیارہ کھلاڑیوں کا انتخاب مسئلہ بن چکا ہے ۔ رائنا جوکہ دھرمشالہ میں کھیلے گئے پہلے ونڈے میں نیوزی لینڈ کے خلاف ٹیم کی نمائندگی نہیں کرپائے تھے کیوں کہ وہ بخار میں مبتلا تھے ۔ رائنا کی عدم موجودگی میں کیدار جئے دیو نے متاثرکن مظاہرہ کیا، جیسا کہ انھوں نے پارٹ ٹائم بولنگ کے ذریعہ دو وکٹیں بھی حاصل کیں اور یہی وہ صلاحیت ہے جو انھیں رائنا کے ساتھ سخت مسابقتی ماحول کو پیدا کررہی ہے ، کیونکہ رائنا بھی درمیانی اوورس میں متاثرکن بولنگ کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں ۔ نیوزی لینڈ کے خلاف جمعرات کو کھیلے جانے والے رواں سیریز کے دوسرے ونڈے میں ٹیم انتظامیہ کیلئے قطعی گیارہ کھلاڑیوں کے انتخاب میں رائنا اور کیدار میں کسی ایک کو منتخب کرنا ایک مسئلہ بن چکا ہے ۔ دریں اثناء نٹس میں آج جئے دیو آف بریک اسپن کرتے دکھائی دیئے جبکہ رائنا بھی نٹ سیشن میں کافی مصروف رہے ۔ رائنا جوکہ اُترپردیش کیلئے رانجی کے مقابلے میں مدھیہ پردیش کے خلاف بیٹنگ نہیں کرپائے اور بخار کی وجہ سے نیوزی لینڈ کے خلاف پہلا ونڈے بھی نہیں کھیل پائے تھے

لیکن آج نٹ پریکٹس کے دوران وہ اسپنرس کے خلاف اونچے شاٹ کھیلنے میں مصروف رہے ۔ کیدار بھی نٹ پریکٹس کے دوران کافی مصروف رہے اور ان کی نگرانی کمبلے کے علاوہ بیٹنگ کوچ سنجے بانگر اور ٹیم کے ماہر راگھویندرا بھی کررہے تھے ۔ دیگر بیٹسمینوں میں کپتان مہندر سنگھ دھونی نے طویل وقت تک نٹ میں بیٹنگ کرتے رہے اور ان کے خلاف دھول کلکرنی مسلسل بولنگ کرتے رہے ۔ بعد ازاں دھونی نے مخصوص اسپنرس میں جینت کے خلاف بھی 25 منٹ تک بیٹنگ کی ۔ نٹ پریکٹس کے دوران دھونی جینت کو مخصوص فیلڈنگ کے مطابق بولنگ کرنے کی ہدایت دے رہے تھے ۔ ایک موقع پر جینت نے اپنے کپتان سے پوچھا تھا کہ پوائنٹ کے فیلڈر کو اُوپر کیا جانا چاہئے جس سے یہ اشارہ ملتا ہے کہ دھونی چاہتے تھے کہ اُن کے خلاف بولنگ کررہے اسپنرس انھیں آف اسٹمپ کے باہر کھل کر کھیلنے کا موقع نہ دیں ۔ جینت کو ہدایت دی گئی تھی کہ وہ روایتی آف بریک بولنگ کریں لیکن گیندیں کسی قدر شاٹ آف لینتھ رکھی جائے ۔ ان گیندوں کے خلاف دھونی اپنی کریز چھوڑ کر آگے نکلتے ہوئے اسٹروکس کھیل رہے تھے ، جیسا کہ مقابلے کے آخری اوورس میں کھیلا جاتا ہے ۔ فیروز شاہ کوٹلہ گراؤنڈ پر ہندوستانی کھلاڑیوں کے لئے یہ اختیاری نٹ پریکٹس تھی جس میں کپتان دھونی کے ساتھ رائنا بھی طویل وقفہ تک بیٹنگ کرتے رہے ۔ نٹ پریکٹس میں دیگر جو کھلاڑی موجود تھے ان میں اکثر پٹیل ، مندیپ سنگھ ، کیدار ، کلکرنی ، جینت موجود تھے جبکہ نائب کپتان ویراٹ کوہلی ، اجنکیا رہانے ، جسپریت بُمرا ، ہاردیک پانڈے اور اُمیش یادو آرام کررہے تھے ۔

TOPPOPULARRECENT