Saturday , August 19 2017
Home / Top Stories / راجستھان میں کہرسے ٹرین خدمات متاثر

راجستھان میں کہرسے ٹرین خدمات متاثر

وادی کشمیر میں بعض مقامات پردرجہ حرارت میں اضافہ ‘ عوام کو راحت
جئے پور/ سری نگر۔27ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) شدید سردی کی لہر راجستھان میں آج بھی مسلسل جاری رہی ۔ عوام کو سکراور چرو میں کل رات اقل ترین درجہ حرارت 4.5 درجہ سلسیس ہوجانے کی وجہ سے ٹھٹھرنا پڑا ۔ کہر جاری رہنے کی وجہ سے پوری ریاست میں ٹرین خدمات متاثر ہوئیں ۔ تازہ مغربی خلل اندازی کی وجہ سے جو پاکستان اور افغانستان سے بحرکیسپین کے راستہ سے ہندوستان میں داخل ہوئی ۔ شمال مشرقی راجستھان میں اور متصلہ ریاستوں پنجاب ‘ ہریانہ دہلی اور یو پی میں تقریباً 10ٹرینیں منسوخ کردی گئیں ۔ جب کہ نارتھ ویسٹرن ریلوے کی ٹرینیں تاخیر سے چل رہی ہے ۔ دریں اثناء ٹونک میں اقل ترین درجہ حرارت 5.7درجہ سلسیس ‘ سری گنگانگر میں 6.7درجہ ‘ پلانی6.3‘ چتورگڑھ 8درجہ ‘ بوندی8.8 اور ماؤنٹ آبو میں 7درجہ سلسیس اقل ترین درجہ حرارت ریکارڈ کیا گیا ۔

سرینگر سے موصولہ اطلاع کے بموجب وادی کشمیر کے عوام کو سردی کی لہر سے تھوڑی سی راحت حاصل ہوئی جب کہ آج مسلسل دوسرے دن بھی درجہ حرارت میں تھوڑا سا اضافہ ہوا ۔ محکمہ موسمیات کی پیش قیاسی کے بموجب وادی کشمیر میں آج مطلع ابرآلود رہنے کا امکان ہے ۔ یکادکا مقامات پر بارش بھی ممکن ہے ۔ ریاست کے گرمائی دارالحکومت سرینگر میں اقل ترین درجہ حرارت منفی 0.9 درجہ سلسیس تھا ۔ گلمرگ میں سب سے زیادہ سردی محسوس کی گئی ۔ یہاں درجہ حرارت منفی 4.7 درجہ سلسیس ہوگیا تھا ۔ وادی کشمیر فی الحال 40روزہ شدید سرد موسم کے دور سے جسے مقامی زبان میں ’’ چلائی کلاں ‘‘ کہا جاتا ہے گذر رہی ہے ۔ 21ڈسمبر سے مسلسل منفی درجہ حرارت محسوس کیا جارہا ہے ۔ 40دن کے چلائی کلاں کے بعد 40دن کا چلائی خورد اور اس کے بعد 10روزہ چلائی بچہ کا موسم ہوتا ہے اور سردی کی شدت میں بتدریج کمی ہوتی جاتی ہے ۔ اس کے بعد موسم گرما کا آغاز ہوجاتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT