Thursday , September 21 2017
Home / Top Stories / راجناتھ سنگھ نے افضل گرو مسئلہ پر سیاسی طوفان کھڑا کردیا

راجناتھ سنگھ نے افضل گرو مسئلہ پر سیاسی طوفان کھڑا کردیا

New Delhi: ABVP activists protest against an event at JNU supporting Parliament attack convict Afzal Guru in New Delhi on Friday. PTI Photo by Kamal Singh(PTI2_12_2016_000107A)

جواہر لال نہرو یونیورسٹی دہلی واقعہ کو لشکر طیبہ کے صدر حافظ سعید کی سرپرستی ، مرکزی وزیر داخلہ کا دعویٰ

نئی دہلی ۔ /14 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے یہ دعویٰ کرتے ہوئے سیاسی طوفان کھڑا کردیا ہے کہ جواہر لال نہرو یونیورسٹی میں پارلیمنٹ پر حملہ کرنے والے سزائے موت یافتہ افضل گرو کی تائید میں جو احتجاج کیا جارہا ہے اس احتجاج کو لشکر طیبہ کے بانی حافظ سعید کی سرپرستی حاصل ہے ۔ جواہر لال نہرو یونیورسٹی میں اس بحران پر سیاسی تماشہ تیز ہوگیا ہے ۔ اپوزیشن پارٹیوں نے مرکزی وزیر داخلہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ جواہر لال نہرو یونیورسٹی کیمپس کے واقعہ پر ان کے ادعا کے حق میں ثبوت پیش کریں ۔

جواہر لال نہرو یونیورسٹی طلباء یونین کے صدر کنہیا کمار کی رہائی کا مطالبہ کرتے ہوئے طلباء نے احتجاج شروع کیا ہے ۔ کنہیا کمار پر قوم دشمنی کا الزام ہے ۔ جواہر لال نہرو یونیورسٹی میں پولیس کارروائی کے خلاف بڑھتے احتجاج کے درمیان راجناتھ سنگھ نے کہا کہ جواہر لال نہرو یونیورسٹی طلباء کی جانب سے افضل گرو کی تائید میں جاری احتجاج کو حافظ سعید کی حمایت حاصل ہے ۔ اس سچائی سے قوم کو واقف ہونا چاہئیے ۔ یونیورسٹی میں جو کچھ ہورہا ہے نہایت ہی بدبختانہ ہے ۔ الہ آباد میں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے راجناتھ سنگھ نے کہا کہ افضل گرو کی تیسری برسی کے موقعہ پر طلباء نے غیر ضروری ہنگامہ کھڑا کیا ہے ۔ طلباء کو حافظ سعید کی تائید حاصل کرنے سے متعلق راجناتھ سنگھ کے ریمارک پر سوال اٹھاتے ہوئے نیشنل کانفرنس کے لیڈر عمر عبداللہ نے کہا کہ یہ طلباء کے خلاف نہایت ہی سنگین الزام ہے ۔ اگر راجناتھ سنگھ کے پاس کوئی ثبوت ہو تو وہ پیش کریں ۔ پولیس  اس بات کی تحقیقات کررہی ہے کہ جس ٹوئٹر پر بیان دیا گیا ہے آیا یہ  ٹوئٹر لشکر طیبہ کے بانی سے تعلق رکھتا ہے ۔ اسی دوران سوشیل میڈیا پر ایک ویڈیو گشت کررہا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ اکھیل بھاریہ ودیارتھی پریشد کے ارکان موافق پاکستان نعرے لگارہے ہیں ۔ تاہم اے بی وی پی کے طلباء نے ان الزامات کو بکواس قرار دیا اور کہا کہ یہ ویڈیو مسخ شدہ ہے ۔

یونیورسٹی تنازعہ پر امیت شاہ سے مودی کی ملاقات
نئی دہلی ۔ /14 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) جواہر لال نہرو یونیورسٹی نئی دہلی میں طلباء یونینوں کے خلاف پولیس کارروائی پر اٹھنے والے سیاسی طوفان کے درمیان وزیراعظم نریندر مودی نے آج صدر پارٹی امیت شاہ سے ملاقات کی اور بی جے پی کے دیگر تمام اعلیٰ قائدین سے تبادلہ خیال کیا ۔ وزیراعظم کی رہائش گاہ پر مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ ، وزیر فینانس ارون جیٹلی ، وزیر خارجہ سشما سواراج کے علاوہ امیت شاہ نے وزیراعظم نریندر مودی سے ملاقات کی اور موجودہ سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا ۔ پارٹی ذرائع نے زور دے کر کہا کہ یہ ملاقات جواہر لال نہرو یونیورسٹی تنازعہ سے راست تعلق نہیں رکھتی بلکہ یہ ملاقات آنے والی اسمبلی انتخابات اور پارلیمنٹ کے بجٹ سیشن کے بشمول دیگر گرما گرم مسائل پر بات چیت کیلئے کی گئی ۔

TOPPOPULARRECENT