Monday , September 25 2017
Home / سیاسیات / راجیہ سبھا میں وزیراعظم کے خلاف تحقیر نوٹس

راجیہ سبھا میں وزیراعظم کے خلاف تحقیر نوٹس

ایوان سے غیر حاضر رہنے پر سی پی آئی ایم کا اقدام
نئی دہلی۔24 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) سی پی آئی ایم نے آج راجیہ سبھا میں وزیراعظم نریندر مودی کے خلاف تحقیر نوٹس پیش کی۔ پارلیمنٹ کی عمارت میں موجود رہنے کے باوجود ایوان سے ’’غیر حاضر‘‘ رہنے پر یہ قدم اٹھایاگیا ہے۔ نوٹوں کی منسوخی کے مسئلہ پر ان کی عدم وضاحت پر سی پی آئی ایم نے ناراضگی ظاہر کی ہے۔ سی پی آئی ایم جنرل سکریٹری سیتارام یچوری نے کہا کہ میں نے وزیراعظم نریندر مودی کی جانب سے ایوان کی تحقیر کرنے پر ایک تحریک پیش کی ہے۔ ان نوٹوں کو قوعد کے مطابق راجیہ سبھا سکریٹری جنرل اور ایوان بالا کے چیرمین کو پیش کیا گیا۔ ملک بھر میں 8 نومبر سے پرانے نوٹوں کا چلن بند کردیا گیا ہے ۔ اس سے عوام الناس کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ ہم کو توقع ہے کہ اس نوٹس کا نوٹ لیا جائے گا اگر وہ اسے قبول نہیں کرتے ہیں تو ایسی صورت میں یہ جاننے کی کوشش کی جائے گی کہ آخر کن بنیادوں پر اسے قبول نہیں کیا گیا۔ مودی کی غیر حاضری اور ایوان کی توہین ہرگز قابل قبول نہیں ہے۔ ہم کو تیقن دیا گیا تھا کہ وزیراعظم ایوان میں حاضر رہیں گے۔ وہ ایک ہفتہ سے ایوان میں نہیں آئے۔

 

نوٹوں کی منسوخی کو بی جے پی انتخابی مسئلہ بنا رہی ہے
لکھنؤ، 24 نومبر (یواین آئی) نوٹوں کی منسوخی کے سلسلے میں پورے ملک میں جاری مخالفت اور حمایت کے درمیان بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) اتر پردیش اسمبلی انتخابات میں اسے مسئلہ بنانے والی ہے۔ نریندر مودی کے کرنسی منسوخ کرنے کے فیصلے کی حمایت میں بی جے پی نے جگہ جگہ ہورڈنگس، بینر لگانے شروع کر دیے ہیں۔ نوٹوں کی منسوخی کے فیصلے کے بعد ملک کے متعدد حصوں میں ہوئے ضمنی انتخابات سے بھی پارٹی کوحوصلہ افزائی ملی ہے ، اس لیے بی جے پی اسے انتخابی مسئلہ بنانے کی طرف تیزی سے بڑھ رہی ہے۔ بی جے پی کے ریاستی دفتر اور اس کے آس پاس لگائے گئے ہورڈنگس اور بینر وں پر نوٹ بندی اور مودی کے حق میں مختلف نعرے لکھے ہوئے ہیں۔ ان ہورڈنگس اور بینرز پر وزیر اعظم مسٹر مودی کی تصویر اور پارٹی کا انتخابی نشان کمل بنے ہوئے ہیں۔ پارٹی کے پرچم کے رنگ میں لگے ہورڈنگس اور بینرز میں مسٹر مودی کو ہیرو کے طور پر دکھایا جا رہا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT