Saturday , September 23 2017
Home / سیاسیات / راجیہ سبھا کے انتخابات میں اوپن بیالٹ کا استعمال

راجیہ سبھا کے انتخابات میں اوپن بیالٹ کا استعمال

الیکشن کمیشن کی تجویز پر ریاستوں سے رائے کی طلبی
نئی دہلی۔/9اگسٹ، ( سیاست ڈاٹ کام ) مرکزی حکومت نے قانون ساز کونسل کے انتخابات کے طرز پر راجیہ سبھا کے انتخابات میں اوپن بیالٹ سسٹم متعارف کروانے کے امکانات پر ریاستوں سے رائے طلب کی ہے تاکہ ایوان بالا کے چناؤ میں دولت کے بیجا استعمال کی روک تھام کی جاسکے۔ ماہ جنوری میں منعقدہ وزارت قانون کے عہدیداروں کے ساتھ ایک اجلاس میں الیکشن کمیشن نے یہ آئیڈیا پیش کیا تھا بعد ازاں ماہ جون میں اسوقت کے وزیر قانون ڈی وی سدانندا گوڑا نے مختلف ریاستوں کے چیف منسٹرس کو مکتوبات روانہ کرتے ہوئے نئے طریقہ کار ( نظام ) پر رائے طلب کی تھی۔ اوپن بیالٹ سسٹم کے تحت سیاسی جماعتوں سے وابستہ ارکان اسمبلی کو ووٹ ڈالنے کے بعد پارٹی کے مجاز کردہ نمائندوں کو بیالٹ پیپر بتانا ہوگا۔ الیکشن کمیشن کی یہ تجویز ہے کہ قانون ساز کونسل کے انتخابات کی صورت میں اوپن بیالٹ کے ذریعہ رائے دہی کروائی جائے کیونکہ دونوں انتخابات ( راجیہ سبھا اور قانون ساز کونسل ) میں رائے دہندگان، ارکان اسمبلی ہوتے ہیں اور اس نئے طریقہ کار سے انتخابی دھاندلیوں پر قابو پایا جاسکتا ہے۔ اوپن بیالٹ سسٹم کی 7ریاستوں بشمول آندھرا پردیش، تلنگانہ ، بہار نے تائید کی ہے۔ واضح رہے کہ راجیہ سبھا انتخابات میں اوپن بیالٹ کے استعمال کیلئے قانون عوامی نمائندگان 1951 میں ترمیم کی گئی ہے۔ جبکہ اگسٹ 2006 میں 5ججوں پر مشتمل سپریم کورٹ کی دستوری بنچ نے راجیہ سبھا انتخابات میں خفیہ بیالٹ کی بجائے کھلے بیالٹ متعارف کروانے کیلئے قانون میں ترمیم کو برقرار رکھا تھا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT