Wednesday , August 16 2017
Home / سیاسیات / راجیہ سبھا کے انتخابات میں کراس ووٹنگ کا اندیشہ

راجیہ سبھا کے انتخابات میں کراس ووٹنگ کا اندیشہ

راجستھان میں بی جے پی ارکان اسمبلی نظر بند
جے پور۔ 9 جون (سیاست ڈاٹ کام) راجستھان میں راجیہ سبھا کی چار سیٹوں پر 11 جون کو ہو نے والے الیکشن کی وجہ سے ریاست میں سیاسی سرگرمیاں تیز ہو گئی ہیں اور حکمراں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے ووٹوں میں نقب لگانے کے اندیشے کے پیش نظر اپنے گڑھ کو مضبوط کرتے ہوئے ممبران اسمبلی کو ایک ہوٹل میں ٹھہرایا ہے ۔اس الیکشن میں حکمراں بی جے پی کراس ووٹنگ کے اندیشے سے بری طرح پریشان ہے اور اپنے ممبران اسمبلی کو متحد رکھنے کے ساتھ ہی آزاد امیدوار اور چھوٹی پارٹیوں میں بھی نقب لگانے کی کوشش کر رہی ہے ۔پارٹی نے اپنے ممبران اسمبلی کو اجمیر روڈ پر واقع ایک ہوٹل میں ٹھہرایا ہے جہاں پر انہیں ووٹنگ کے عمل کی مشق کرائی جائے گی۔مرکزی مشاہد پیوش گوئل جے پور پہنچ چکے ہیں۔ اس کے علاوہ بی جے پی امیدوار مرکزی وزیر برائے شہری ترقی ایم وینکیا نائیڈو ،سینئر لیڈر اوم پرکاش ماتھر، ہرش وردھن سنگھ، رام کمار ورما اور وسندھرا راجے کابینہ کے رکن اور ممبر اسمبلی ہوٹل میں موجود ہیں۔وزیر اعلی وسندھرا راجے بھی اس ہوٹل میں موجود رہیں گی اور یہ تمام افراد 11 جون کو ووٹنگ کی جگہ اسمبلی میں ہوٹل سے سیدھے پھنچیں گے ۔آزاد امیدوار کمل مرارکا نے انتخابی میدان میں اتر کر بی جے پی کی حکمت عملی فیل کرنے کی کوشش کی ہے اور کانگریس، آزاد اور چھوٹی پارٹیوں کے ممبران اسمبلی کو اپنے ساتھ ملالیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT