Monday , August 21 2017
Home / ہندوستان / راست منتقلی اسکیم کے ذریعہ 27 ہزار کروڑ کی بچت

راست منتقلی اسکیم کے ذریعہ 27 ہزار کروڑ کی بچت

جعلی استفادہ کنندوں کا صفایا، وزیراعظم کا جائزہ اجلاس
نئی دہلی ۔ 10 مئی (سیاست ڈاٹ کام) سبسیڈیز کی راست منتقلی اسکیم سے مختلف بہبودی اسکیمات بشمول پبلک ڈسٹری بیوشن سسٹم ایل پی جی کی تقسیم اور نریگا میں تقریباً 27 ہزار کروڑ روپئے کی نمایاں بچت ہوئی ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی کی زیرصدارت اجلاس میں یہ بات بتائی گئی۔ سال 2015-16ء میں راست منتقلی اسکیم کے ذریعہ 30 کروڑ سے زائد استفادہ کنندگان میں 61 ہزار کروڑ روپئے سے زائد کی رقم تقسیم کی گئی۔ ان میں زائد از 25 ہزار کروڑ روپئے نریگا اور 21 ہزار کروڑ روپئے ایل پی جی تقسیم کیلئے پہل اسکیم کے تحت تقسیم کئے گئے۔ آدھار اور راست منتقلی اسکیم پر پیشرفت کا جائزہ لینے کے مقصد سے منعقدہ یہ اجلاس تقریباً دو گھنٹے جاری رہا اور وزیراعظم نے ایک ایسا پلیٹ فارم تیار کرنے پر زور دیا جو غلطیوں سے خالی ہو۔ اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ حقیقی استفادہ کنندگان کو بروقت رقم مل سکے۔ وزیراعظم کے دفتر نے یہ بات بتائی۔ اجلاس میں وزیراعظم کو آدھار کارڈز کی تیاری میں اب تک کی پیشرفت سے واقف کروایا گیا۔ راست منتقلی اسکیم کے ذریعہ مختلف بہبودی اسکیمات میں نمایاں بچت ہوئی اور جعلی استفادہ کنندگان کو ختم کرنے میں بھی مدد ملی۔ مثال کے طور پر 1.6 کروڑ بوگس راشن کارڈز حذف کردیئے گئے اس کے نتیجہ میں تقریباً 10 ہزار کروڑ روپئے کی بچت ہوئی۔ اسی طرح پہل اسکیم میں 3.5 کروڑ جعلی استفادہ کنندگان کو ختم کرنے سے صرف سال 2014-15ء میں 14 ہزار کروڑ روپئے کی بچت ہوئی۔ نریگا میں بھی سال 2015-16ء کے دوران 3 ہزار کروڑ روپئے(تقریباً 10 فیصد) کی بچت ہوئی۔ بتایا گیا کہ کئی ریاستوں اور مرکزی زیرانتظام علاقوں میں بھی راست منتقلی اسکیم کے ذریعہ کافی بچت ہوئی۔

TOPPOPULARRECENT